سعودی حکومت بھی وہ کام کرنے پر مجبور ہوگئی جس کیلئے پاکستانی حکومت پوری دنیا میں بدنام ہے

سعودی حکومت بھی وہ کام کرنے پر مجبور ہوگئی جس کیلئے پاکستانی حکومت پوری دنیا ...
سعودی حکومت بھی وہ کام کرنے پر مجبور ہوگئی جس کیلئے پاکستانی حکومت پوری دنیا میں بدنام ہے

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) چند سال قبل تک کوئی یہ تصور بھی نہ کر سکتا تھا کہ سعودی عرب جیسے ملک کو بھی کسی سے قرض لینا پڑ سکتا ہے مگر اب صورتحال یہ ہے کہ مملکت بانڈز کی صورت میں اربوں ڈالر کے قرض لے رہی ہے۔ سعودی عرب نے اپنے پہلے اسلامی بانڈ کی فروخت سے 9 ارب ڈالر (تقریباً 9کھرب پاکستانی روپے) حاصل کئے ہیں جو توقعات سے ایک ارب ڈالر زائد ہے۔

بلوم برگ کی رپورٹ کے مطابق سعودی حکومت نے 4.5ارب ڈالر پر مشتمل بانڈز کا ایک حصہ 100 بیسز پوائنٹس مڈ سواپ ریٹ پر فروخت کیا جبکہ اسی حجم کا ایک حصہ جو کہ بینچ مارک سے 140 بیسز پوائنٹس پر مشتمل ہے بھی فروخت کے لئے پیش کیا گیا۔ سرمایہ کاروں نے بولی میں 33ارب ڈالر (تقریباً 33کھرب پاکستانی روپے) کی پیشکش کی۔

سعودی شہریوں کیلئے بڑی خوشخبری، حکومت کا آمدنی پر ٹیکس نہ لینے کا فیصلہ

سعودی عرب بجٹ خسارے پر قابو پانے کے لئے، جو رواں سال 53 ارب ڈالر (تقریباً 53کھرب پاکستانی روپے) تک پہنچ سکتا ہے، مقامی اور بین الاقوامی منڈیوں کا رخ کررہا ہے۔ گزشتہ سال اکتوبر میں بھی سعودی عرب نے اپنی تاریخ کی سب سے بڑی بانڈ سیل سے 17.5ارب ڈالر حاصل کئے تھے۔

مزید :

عرب دنیا -