مشکوک پیکٹ کی اطلاع پر امریکی صدارتی محل وائٹ ہاﺅس خالی کرا لیا گیا

مشکوک پیکٹ کی اطلاع پر امریکی صدارتی محل وائٹ ہاﺅس خالی کرا لیا گیا
مشکوک پیکٹ کی اطلاع پر امریکی صدارتی محل وائٹ ہاﺅس خالی کرا لیا گیا

  

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آ ن لائن) ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد تیسری دفعہ امریکی صدارتی محل وائٹ ہاﺅس کو خالی کرا لیا گیا ہے۔ وائٹ ہاﺅس کو مشکوک لفافے کی موجودگی کی اطلاع پر خالی کرایا گیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق وائٹ ہاﺅس کے جنوبی جنگلے کے قریب ایک مشکوک پیکٹ کی اطلاع پر سیکیورٹی ایجنسیز نے وائٹ ہاﺅس کو خالی کرالیا جبکہ وائٹ ہاﺅس کے باہر کی گلی سے بھی لوگوں کو نکال دیا گیاہے۔ وائٹ ہاﺅس میں موجود صحافیوں کو جنوبی لان سے ہٹا کر کانفرنس روم میں منتقل کردیا گیا ہے۔

امریکی ٹی وی سی این این کے وائٹ ہاﺅس میں موجود صحافی پیٹر مورس نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لکھا کہ مشکوک پیکٹ وائٹ ہاﺅس کے پینسلوانیا ایونیو سے برآمد ہوا ہے جس کے بعد مذکورہ ایونیو کے ساتھ لیفائٹ پارک بھی خالی کرالیا گیا ہے۔ ایک اور صحافی بین پیج گل نے بتایا کہ مشکوک بیگ برآمد ہونے پر سیکیورٹی ایجنسیز نے وائٹ ہاﺅس میں سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد یہ تیسری بار ہے جب وائٹ ہاﺅس کو لاک ڈاﺅن کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ پہلی بار ایک شخص وائٹ ہاﺅس کا جنگلہ پھلانگ کر اندر داخل ہو گیا تھا جس پر وائٹ ہاﺅس خالی کرانا پڑا تھا۔ دوسری بار کچھ روز پہلے وائٹ ہاﺅس کی جنوبی طرف ایک مشکوک پیکٹ بر آمد ہونے پر اسے خالی کرایا گیا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -