ملتان جانیوالی ٹرین کو بم سے اڑانے کی کوشش ناکام ،ریلوے کا اللہ نگہبان : شیخ رشید

ملتان جانیوالی ٹرین کو بم سے اڑانے کی کوشش ناکام ،ریلوے کا اللہ نگہبان : شیخ ...

ٹھٹھہ(مانیٹرنگ ڈیسک ،این این آئی) ملتان جانے والی بہاالدین زکریا ایکسپریس تباہی سے بال بال بچ گئی،جنگ شاہی ریلوے اسٹیشن کے قریب ٹرین کو بم سے اڑانے کی کوشش ناکام بنادی گئی ہے۔، ٹھٹھہ جنگ شاہی ریلوے سٹیشن سے بم برآمد ہونے پرمسافروں سے بھری ٹرین کو ریلوے حکام نے سٹیشن سے چند فرلانگ پہلے ہی روک لیاگیا جس سے ٹرین بڑی تباہی سے بال بال بچ گئی۔ بم ناکارہ بنانے کے بعد ٹریک کو بحال کر دیا گیا ہے ۔ ریلوے ذرائع نے بتایا کہ بتایاکہ ٹھٹھہ جنگ شاہی ریلوے سٹیشن سے دیسی ساخت کا آدھا کلو وزنی بم برآمدہوا، بہاء الدین زکریا ایکسپریس ریلوے اسٹیشن پہنچنے ہی والی تھی کہ حکام نے ٹرین کو پیچھے رکوا دیا اور بم ڈسپوزل اسکواڈ کو فوری طور پر طلب کر لیا گیا جس نے موقع پر پہنچ کر بم کو ناکارہ بنا دیا۔ ایس ایس پی ٹھٹھہ کے مطابق بہاالدین زکریا ایکسپریس کے علاوہ 2 مزید ٹرینیں اس ٹریک سے گزرنی تھیں۔ ایس ایس پی شبیر سیٹھار نے مزید بتایا کہ تخریب کاری کے شبہ میں7افراد کو حراست میں لے لیاگیا ہے جن میں سے کچھ کا تعلق دوسرے صوبے سے ہے۔ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بعد ازاں سرچنگ کے بعد ٹریک کو کلیئر قرار دیدیا جس پر ریلوے ٹریفک بحال کر دی گئی۔

ٹرین ،بم

کراچی ( سٹاف رپورٹر، این این آئی) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے ریلوے ٹریک کی حفاظت اللہ کر رہا ہے، کراچی ریلوے ڈویژن میں 1600 افراد کو روزگار دیں گے، کراچی سرکلرریلوے اگر اب نہ بنی تو قیامت تک نہیں بنے گی۔ وفاقی وزیر نے کراچی میں ڈیوٹی کے دوران جان سے ہاتھ دھونے والے انجن ڈرائیور کے ورثا کو تقریبا 25 لاکھ مالیت کا چیک اور اس کے بیٹے کو نوکری دینے کا بھی اعلان کیا۔ اس موقع پرشیخ رشیدنے کہا پاکستان ریلوے کا خسارہ بہت زیادہ ہے۔ ریلوے کے ملازمین کی تعداد ایک لاکھ ہے جب کہ ڈیڑھ لاکھ افراد کو پنشن دے رہے ہیں۔ اسی طرح ایم ایل ون میں بھی ڈیڑھ لاکھ افراد نوکریاں ملیں گی۔انہوں نے کراچی سے پشاور1760کلو میٹر طویل ایم ایل ون منصوبے کا ذکر کرتے ہوئے کہاکراچی سے پشاور کے لیے ایک نیا ڈبل ٹریک بچھایا جائے گا جس پر ٹرین کی کم سے کم رفتار160کلومیٹر ہو گی ۔ یہ منصوبہ اگلے 5سالوں میں مکمل ہوگا۔انہوں نے کہا اگر ہماری مدت اقتدار میں کے سی آر مکمل نہیں ہوتا تو پھر وہ کبھی بھی مکمل نہیں ہوپائے گا۔ یہ واقعی ایک اہم منصوبہ ہے جو اب سی پیک اور گوادر پورٹ کا حصہ بھی بن گیا ہے۔

ضرور پڑھیں: اسد عمر کی چھٹی

شیخ رشید

مزید : صفحہ اول