ملک بچانے کیلئے اسٹیبلشمنٹ کی لاڈلی حکومت گرانا ہو گی : میاں افتخار حسین

ملک بچانے کیلئے اسٹیبلشمنٹ کی لاڈلی حکومت گرانا ہو گی : میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی الیکشن کمیشن کے چیئرمین میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ نیب کی کاروائیاں اب انتقام سے دو قدم آگے بڑھ چکی ہیں اور نیب چیئرمین اپوزیشن رہنماؤں کی عزتوں کے دشمن بن چکے ہیں ،اپوزیشن لیڈر کے بیٹے اور اب ان کی بیٹی کے گھر پر چھاپہ نیب چیئرمین کے کردار پر سوالیہ نشان ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں اے این پی سندھ کے انٹرا پارٹی انتخابات کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر اے این پی سندھ کیلئے افہام و تفہیم سے شاہی سید اے این پی سندھ کے صدر اور یونس بونیری جنرل سیکرٹری منتخب کر لئے گئے، دیگر کابینہ میں سینئر نائب صدر شاہد علی خان ،شیر آفریدی ڈپٹی جنرل سیکرٹری اور بحر کمال ایڈوکیٹ سیکرٹری اطلاعات شامل ہیں ،میاں افتخار حسین نے نو منتخب کابینہ کو مبارکباد پیش کی اور کہا کہ پختونوں کے حقوق کی جنگ کیلئے آپس کے اتحاد و اتفاق کی اشد ضرورت ہے،ملک کی سیاسی صورتحال کے حوالے سے انہوں نے مزید کہا کہ احتساب کے نام پر کئے جانے والے انتقام کی پوری دنیا میں مثال نہیں ملتی ،انہوں نے خبردار کیا کہ نیب اور اس کے ذریعے انتقامی کاروائیاں کرانے والے مکافات عمل بھی یاد رکھیں،انہوں نے کہا کہ نیب چیئرمین نااہل وزیر اعظم کے باڈی گارڈ بنے ہوئے ہیں اور پشاور بی آر ٹی میں ہونے والی خرد برد ،کرپشن اور کمیشن کے دستاویزی ثبوت ہونے کے باوجود آنکھیں بند کر رکھی ہیں،نیب چیئرمین پاکستان کی سب سے متنازعہ شخصیت ہیں اور وہ کٹھ پتلی وزیر اعظم کو نام نہاد سہارا دے کر اپنی نوکری پکی کرنے کے چکر میں ہیں،انہوں نے کہا کہ کشکول کے خلاف آواز اٹھانے والا شخص آج دنیا کا سب سے بڑا بھکاری بن چکا ہے اور اسے کرسی تک لانے والے بھی ششدر ہیں ،میاں افتخار حسین نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ نے ملکی سلامتی داؤ پر لگا کر عمران نیازی کو اقتدار دیا جو اس وقت ملک کیلئے سیکورٹی رسک بن چکا ہے، انہوں نے کہا کہ ملک میں مہنگائی کا طوفان برپا ہے غریب آدمی کیلئے زندگی گزارنا مشکل ہے جبکہ حکمران اپنی شاہ خرچیوں میں اضافہ کرتے جا رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ رکان قومی اسمبلی کے لیے ترقیاتی فند کی مخالفت کرنے والا آج اپنے دستخطوں سے صوابدیدی فنڈ جاری کررہا ہے، میاں افتخار حسین نے کہا کہ یوٹرن کسی لیڈر کی نہیں بلکہ بے غیرتی کی نشانی ہے اور عمران نیازی سے خیر کی توقع رکھنا بیکار ہے،الیکشن سے قبل جھوٹ بولے گئے اور لوگوں کو گمراہ کرنے والے کو سابق چیف جسٹس نے صادق و امین کا سرٹیفیکیٹ جاری کر دیا ہے ،اسٹیبلشمنٹ کے اشاروں پر ناچنے والا وزیر اعظم کرپٹ ترین انسان ہے جبکہ اسے لانے والی اسٹیبلشمنٹ نے تمام سیاسی قوتوں کو دیوار سے لگا کر پاکستان کی بقاء کو خطرے میں ڈال دیا ہے،میاں افتخار حسین نے کہا کہ وقت آ چکا ہے کہ تمام اپوزیشن میں شامل تمام سیاسی جماعتیں حکومت کے خلاف متحد ہو جائیں تاکہ ملک کو مزید تباہی سے بچایا جا سکے۔

مزید : صفحہ اول