احتساب کا مینڈیٹ ملا، صرف گڈ گورننس پر توجہ نہیں دے سکتے، محمود الرشید

احتساب کا مینڈیٹ ملا، صرف گڈ گورننس پر توجہ نہیں دے سکتے، محمود الرشید

لاہور( این این آئی)صوبائی وزیر ہاؤسنگ میاں محمود الرشید نے کہا ہے کہ ہمیں عوام سے احتساب کا مینڈیٹ ملا ہے اسے بالکل بھول کر صرف گورننس پر توجہ مرکوز کر لیں تو یہ انصاف نہیں ہوگا،میرے محکمے سمیت دو تین محکموں کے وزراء نے کرپشن سامنے آنے کی بات کی ہے ،بہت سی سکیمیں ایسی ہیں جہاں نوے کروڑ سے ایک ارب کی سکیمیں ہیں لیکن پچاس فیصد بھی اخراجات نہیں ہوئے ،ڈاکٹر شہباز گل کو(بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

چھاپوں کے اختیار دینے کا نوٹیفکیشن سامنے آنے پر رد عمل آیا ہے ۔ ایک انٹر ویو میں انہوں نے کہا کہ اگر ہمیں بہت بہتر معاشی حالات ملتے تو عوام کو ریلیف دے سکتے تھے لیکن حکومت اس کے لئے کوشاں ہے ۔ وائٹ کالر کرائم، کک بیکس اور کمیشن کو تلاش کرنا بہت مشکل کام ہے ۔ کچھ شواہد سامنے آئے ہیں جن کی تہہ تک پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں اور انہیں ماہرین کے حوالے کریں گے۔ کچھ غلط معاملات کی پہلے نشاندہی کر چکے ہیں اورآنے والے دنوں میں مزید کچھ کی کریں گے اور دو تین وزراء نے بھی اپنے محکموں کی بات کی ہے ۔ انہوں نے ڈاکٹر شہباز گل کے چھاپوں کے نوٹیفکیشن کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ اس پر رد عمل آیا، جو چیز غیر قانونی اور خلاف ضابطہ ہے ایسے اقدامات کی حوصلہ شکنی ہونی چاہیے ،کچھ کمی کوتاہیاں ہیں جنہیں دور کرنے کی ضرورت ہے اورہم میرٹ اور اصول کی بات کرتے ہیں۔انہو ں وزارت اعلیٰ کے منصب کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ مجھے اس کا قطعی افسوس نہیں ہے ، آج جس طرح کے مشکل حالات اور مالی معاملات ہیں،میڈیا متحرک ہے ، ہر بندہ ڈلیوری مانگتا ہے اس لحاظ سے یہ بہت مشکل ٹاسک ہے ،میں شکر ادا کرتا ہوں کہ میں اس پوزیشن پر نہیں آیا ۔

محمود الرشید

مزید : ملتان صفحہ آخر