قومی توقعات پر پورا اترنے کیلئے پرعزم،زیرو ٹالرنس پالیسی پر عمل پیرا ہیں:چیئر مین نیب قمر الزمان چوہدری

قومی توقعات پر پورا اترنے کیلئے پرعزم،زیرو ٹالرنس پالیسی پر عمل پیرا ...
قومی توقعات پر پورا اترنے کیلئے پرعزم،زیرو ٹالرنس پالیسی پر عمل پیرا ہیں:چیئر مین نیب قمر الزمان چوہدری

  

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )قومی احتساب بیورو کے چیئرمین قمر الزمان چوہدری نے کہا ہے کہ نیب بدعنوانی سے پاک پاکستان کیلئے قوم کی توقعات پر پورا اترنے کیلئے پرعزم ہے، بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح نے پاکستان کی دستور ساز اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے رشوت اور بدعنوانی کو سب سے بڑی لعنت قرار دیا اور اس کے خاتمہ کیلئے آہنی ہاتھ سے نمٹنے پر زور دیا۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب بنیادی طور پر شکایت پر کارروائی کرنے والا ادارہ ہے جسے بدعنوانی کے خاتمہ اور لوٹی ہوئی دولت کی واپسی کیلئے قائم کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نیب کے تفتیشی افسران کوڈ آف کنڈکٹ پر سختی سے عمل کرتے ہیں اور قانون کے مطابق شہادتوں کی بنیاد پر زیرو ٹالرنس پر عمل پیرا ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ نیب نے اپنے قیام سے لے کر اب تک 277.909 ارب روپے کی ریکوری کی ہے۔ نیب کو تین لاکھ 21 ہزار 318 شکایات موصول ہوئیں جنہیں قانون کے مطابق نمٹا دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ 16 سال کے مختصر وقت میں نیب کی کارکردگی دنیا کی کسی بھی تفتیشی ایجنسی سے کہیں زیادہ بہتر ہے یہی وجہ ہے کہ ٹرانپرنسی انٹرنیشنل نے 2014ء میں پاکستان کو 175ویں سے 126 پر ریٹ کیا جبکہ 2015ء میں مزید کم ہوکر یہ 126سے 117پر آگیا۔ انہوں نے کہاکہ انسداد بدعنوانی کی موثر حکمت عملی کی وجہ سے نیب کو پولیس اور ایف آئی اے کے مقابلے میں پلڈاٹ اور مشال پاکستان کے سروے میں 42 فیصد عوام کے اعتماد کا حامل ادارہ قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی اقتصادی ترقی ، سرمایہ کاری اور سماجی استحکام کیلئے موثر احتسابی نظام لازم و ملزوم ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ نیب کے موثر کردار کی وجہ سے سرمایہ کاری اور اقتصادی نمو کیلئے شفافیت کو ضروری قرار دیا گیا ہے۔ نیب نے اپنے آغاز سے ہی بدعنوانی کے خلاف موثر اپروچ اختیار کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عملداری کے ساتھ ساتھ آگاہی اور روک تھام پر خصوصی توجہ مرکوز کی جارہی ہے تاکہ عوام الناس کو بدعنوانی کے مضر اثرات سے بڑی سطح پر روشناس کرایا جاسکے۔

انہوں نے کہا کہ شکایات، تحقیقات اور انکوائریوں کے اعدادوشمار 2014ء اور 2015ء کے مقابلے میں 2016ء کے ابتدائی چھ ماہ میں تقریبا دوگنا ہیں۔ حالیہ اڑھائی سال کے اعدادوشمار نیب کے تمام افسران اور عملہ کی محنت شاقہ کا نتیجہ ہیں اور نیب کے تمام عہدوں کے افسران اور عملہ کے ارکان بدعنوانی کے خلاف جنگ کو قومی فریضے کے طور پر انجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شکایات کی تعداد میں اضافہ بھی نیب پر عوامی اعتماد کے اضافہ کا عکاس ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں اور نیب نے نوجوانوں کو بدعنوانی کی مضر اثرات سے متعلق اگاہی کیلئے نوجوانوں کی شمولیت کو خصوصی توجہ مرکوز کی ہے تاکہ ابتدائی عمر میں ہی ان میں ہر قسم کی بدعنوانی سے متعلق نفرت پیدا کی جاسکے۔

مزید : اسلام آباد