جشن آزادی، چارسدہ کے تاجر اتحاد نے بطور احتجاج یوم سیاہ منایا

جشن آزادی، چارسدہ کے تاجر اتحاد نے بطور احتجاج یوم سیاہ منایا

چارسدہ (بیورورپورٹ) چارسدہ میں تاجر اتحاد نے بجلی کی ناروا لوڈشیڈ نگ اور ریاستی اداروں کے ناانصافیوں کے خلاف جشن آزادی کی بجائے یوم منایا۔ احتجاجی کیمپ میں کالے جھنڈے اور بازؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر تاجروں نے ریاستی اداروں کے خلاف تیسرے روز بھی احتجاج جاری رکھا ۔ یوم آزادی کے روز بھی ریاستی ادارے ٹھس سے مس نہ ہوئے ۔ صوبائی اسمبلی کے سامنے دھرنا دینے کا اعلان ۔ تفصیلات کے مطابق چارسدہ شہر میں بجلی کی بد ترین اور ناروا لوڈشیڈنگ ، امن و امان کی خراب صورتحال اور تاجروں کے ساتھ ضلعی انتظامیہ کی طرف سے تاجروں پر ناجائز جرمانوں کے خلاف تاجر اتحاد کا احتجاجی کیمپ تیسرے روز بھی جاری رہا ۔ تیسرے روز تاجروں نے بازوں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر اور کالے جھنڈے اُٹھا کرریاستی اداروں کے خلاف ریلی نکالی اور شدید نعرہ بازی کی ۔ اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے تاجر اتحاد کے مرکزی صدر مولانا صلاح الدین شاکر اور جنرل سیکرٹری افتخارحسین نے محکمہ واپڈا اور دیگر ریاستی اداروں کی طرف سے تاجروں کے ساتھ ناروا سلوک اور ظلم و ناانصافی پر شدید تنقید کی اور کہاکہ تاجروں کو جشن آزادی کی بجائے یوم سیاہ منانے پر مجبور کیا گیا ۔ آج ہمارے احتجاجی کیمپ کا تیسرا روز ہے مگر واپڈا سمیت کسی ریاستی ادارے کے ذمہ داروں کو احساس تک نہیں ہو رہا کہ فاروق اعظم چوک میں احتجاجی کیمپ اور سیاہ جھنڈے دنیا کو کیا پیغام دے رہے ہیں ۔ اُنہوں نے کہاکہ بدترین لوڈشیڈنگ سے تاجروں کے احساس محرومی میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے اور جب احساس محرومی ختم ہونے کا نام نہیں لیتی تو انسان بغاوت پر اُتر آتا ہے ۔آج ہم ذمہ دار حکام کو واشگاف الفاظ میں پیغام دے رہے ہیں کہ ظلم کے سامنے ہمارے سر کٹ سکتے ہیں مگر جھک نہیں سکتے ۔ تاجروں کی محرومیاں ختم کرنے کیلئے آخری حد تک جانے کو تیار ہیں۔ اُنہوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ چارسدہ کے تاجروں پر رحم کرکے ضلعی انتظامیہ کیلئے جرمانوں کا ٹارگٹ کم کریں ۔

Back to

مزید : کراچی صفحہ اول