وزیر اعظم کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس، سول آرمڈ فورسز کے 29 نئے ونگز بنانے کا فیصلہ

وزیر اعظم کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس، سول آرمڈ فورسز کے 29 نئے ونگز بنانے ...
وزیر اعظم کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس، سول آرمڈ فورسز کے 29 نئے ونگز بنانے کا فیصلہ

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کے اجلاس میں اندرونی سکیورٹی کی بگڑتی صورتحال اور سرحدی علاقوں کی سکیورٹی مضبوط کرنے کیلئے سول آرمڈ فورسز کے 29 نئے ونگز بنانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف، ڈی جی آئی ایس آئی،وفاقی وزیر داخلہ اور وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے شرکت کی ۔ اجلاس میں قومی سلامتی کے حوالے سے 4 اہم فیصلے کیے گئے ۔

اجلاس میں سب سے پہلے سول آرمڈ فورسز کے 29 نئے ونگز بنانے کا فیصلہ کیا گیا جن کا کام اندرونی سکیورٹی کی بگڑتی صورتحال پر قابو پانا اور سرحدی علاقوں کی سکیورٹی مضبوط کرنا ہوگا۔

مزیدپڑھیں:پاکستان کا وہ خاندان جس کے تین بھائی پاک فوج میں جنرل ہیں ،کون کونسے عہدوں پرفرائض سرانجام دے رہے ہیں؟ آپ بھی جانئے

اس سے قبل ہونے والے اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کا جائزہ لینے کیلئے ایک مانیٹرنگ کمیٹی قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا تاہم اس کمیٹی کے چیئرمین کا انتخاب حالیہ اجلاس میں کیا گیا ہے اور مشیر قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر جنجوعہ کو اس کا سربراہ بنایا گیا ہے۔

اعلیٰ سطح کے اجلاس میں تیسرا اہم فیصلہ دہشتگردوں کی فنڈنگ روکنے کے حوالے سے کیا گیاہے ۔ اجلاس میں فیصلہ ہوا ہے کہ دہشتگردوں کو اندرون و بیرون ملک سے فنڈنگ روکنے کیلئے پارلیمنٹ سے باقاعدہ قانون سازی کی جائے گی۔

علاوہ ازیں اجلاس میں حال ہی میں منظور ہونے والا سائبر کرائم بل بھی زیر بحث آیا اور فیصلہ کیا گیا کہ اس پر فوری طور پر عملدرآمد کیا جائے گا۔

مزید : قومی /اہم خبریں