پاکستان ، مقبوضہ کشمیر سمیت دنیا بھر می سبز ہلالی پرچموں کی بہار ، ریلیاں ، جشن ، وفاق میں 31صوبوں میں 21، 21توپوں کی سلامی

پاکستان ، مقبوضہ کشمیر سمیت دنیا بھر می سبز ہلالی پرچموں کی بہار ، ریلیاں ، ...

  

لاہور، اسلام آباد،بیجنگ،واشنگٹن ،لندن،سری نگر(جنرل رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناحؒ کے وژن کی روشنی میں مادر وطن کو امن، ترقی اور خوشحالی کا گہوارہ بنانے کے پختہ عزم کی تجدید اور جمہوری تسلسل کا اہم سنگ میل عبور کرتے ہوئے ملک کا 71 واں جشن آزادی قومی و ملی جوش و جذبے کیساتھ منایا گیا۔اس سلسلے میں پرچم کشائی کی مرکزی تقریب جناح کنونشن سنٹر اسلام آباد میں ہوئی۔تقریب کے مہمان خصوصی صدر مملکت ممنون حسین تھے، جبکہ نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر المک، تینوں مسلح افواج کے سربراہان، غیر ملکی سفیر اور دیگر اعلیٰ سول و عسکری قیادت بھی اس موقع پر موجود تھی۔ مرکزی تقریب میں صدر اور وزیراعظم نے سبز ہلالی پرچم لہرایا، اس سے قبل تلاوت قرآن پاک کی گئی اور پاکستان کا قومی ترانہ بھی پڑھا گیا۔دن کے آغاز پر وفاقی دارالحکومت میں 31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں 21، 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔دوسری جانب صبح 8 بجکر 58 منٹ پر ملک بھر میں سائرن بجائے گئے۔پرچم کشائی کی تقاریب صوبائی دارالحکومتوں کے علاوہ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان سمیت ضلعی ہیڈ کوارٹرز میں بھی منعقد کی گئیں۔چاروں صوبوں کے نگران وزرائے اعلیٰ نے ان تقریبات میں شرکت کی۔کراچی میں مزارِ قائد پر جشن آزادی کے موقع پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب کا انعقاد کیا گیا، پاکستان نیول اکیڈمی کے کیڈٹس ہر سال یو م آزادی پر فرائض سنبھالتے ہیں۔تقریب کے مہمان خصوصی نے پریڈ کا معائنہ بھی کیا۔قائم مقام گورنر آغاسراج اور نگراں وزیراعلیٰ فضل الرحمن نے حاضری دی۔اس موقع پر سکولوں کے بچوں نے قومی ترانہ پیش کیا۔جشن آزادی کے موقع پر لاہور میں مزار اقبال پر پروقار تقریب ہوئی، جہاں پنجاب رینجرز سے آرمی کے چاق وچوبند دستے نے اعزازی گارڈز کے فرائض سنبھال لیے۔اس موقع پر جی او سی میجر جنرل شاہد محمود ن آرمی اور رینجرز کے دستوں کا معائنہ کیا، مزار اقبال پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔کوئٹہ میں بلوچستان اسمبلی کے سبزہ زار پر پرچم کشائی کی تقریب منعقد ہوئی، جہاں نگران وزیراعلیٰ علاؤالدین مری نے پرچم کشائی کی۔تقریب میں نومنتخب اراکین صوبائی اسمبلی اور دیگر اعلیٰ سول و فوجی حکام بھی شریک ہوئے۔ملک کے دیگر حصوں کی شہر لاہور میں بھی دن بھر جشن آزادی روایتی جوش و جذبہ سے منایا گیا۔ دن بھر بازاروں ، سڑکوں ، باغات، سیرگاہوں ، مینار پاسکتان، بادشاہی مسجد، عجائب گھر، چڑیا گھر ، ریس کورس اور باغ جناح میں آزادی کے متوالوں کا رش رہا۔ نوجوانوں، بچوں ، بوڑھوں ، مردوخواتین نے پاکستانی جھنڈے کی مناسب سے کپڑے زیب تن کئے۔ اسی طرح صوبائی دارالحکومت کے تمام میڈیکل کالجز اور ہسپتالوں میں بھی آزادی کے حوالے سے تقریبات منعقد ہوئیں۔ ہسپتالوں کی عمارتوں پر صبح سویرے قومی پرچم لہرائے گئے۔ سروسز انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنز سروسز ہسپتال لاہورسمیت دیگر ہسپتالوں میں پرچم کشائی کی تقاریب منعقد ہوئی۔بیرون ملک پاکستانی مشنز اور سفارت خانوں میں بھی پرچم کشائی کی پروقار تقاریب کا انعقاد کیا گیا۔ اس موقع پر پاکستانی سفیر اور ہائی کمشنرز نے افسران اور کمیونٹی ارکان سے خطاب میں تحریک پاکستان کو اجاگر کیا۔چین کے دارالحکومت بیجنگ میں واقع پاکستانی سفارتخانے میں یوم آزادی پاکستان کے حوالے سے پرچم کشائی کی تقریب منعقد ہوئی، جہاں پاکستانی سفیر مسعود خالد نے قومی ترانے کی دھن پر سبز ہلالی پرچم لہرایا۔پاکستانی سفیر نے اس موقع پر صدرِ مملکت اور وزیراعظم پاکستان کے پیغامات پڑھ کر سنائے۔مسعودخالد کا کہنا تھا کہ چین سے پاکستان کے تعلقات مضبوط سے مضبوط ہو رہے ہیں اور سی پیک پاک چین تعلقات کے لیے سنگِ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔برطانیہ کے دارالحکومت لندن میں واقع پاکستانی ہائی کمیشن میں بھی جشن آزادی کی پروقار تقریب منعقد ہوئی، جہاں ہائی کمشنر صاحبزادہ احمد خان نے قومی پرچم لہرایا۔تقریب میں بڑی تعداد میں پاکستانیوں نے شرکت کی، اس موقع پر صدر مملکت اور نگران وزیراعظم پاکستان کے پیغامات پڑھ کر سنائے گئے۔بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکا میں بھی پاکستانی ہائی کمیشن میں جشن آزادی کی تقریب منعقد ہوئی، اس موقع پر بنگلہ دیش میں پاکستان کے قائم مقام ہائی کمشنر نے سبز ہلالی پرچم فضا میں بلند کیا۔ امریکی ہوم لینڈ سیکیورٹی کے رکن جے لوئی اور چیئر مین امریکی امورخارجہ کمیٹی ایڈ رائس نے پاکستان کے یوم آزادی پرمبارکباد دی ہے ۔جنوبی ایشیا کیلئے امریکی امورخارجہ کمیٹی رکن بریڈشرمین کا یوم پاکستان پر پیغام میں کہنا تھا کہ جنوبی ایشیاکے استحکام وامریکی مفادات کیلئے پاکستان کی پالیسی اہمیت رکھتی ہے۔اس سے قبل امریکا میں پاکستانی سفیر علی جہانگیر صدیقی نے اپنے پیغام میں کہا تھا کہ یوم آزادی کاآغازہم آباو اجدادکی قربانیوں کی یادسے کرتے ہیں،آج اس یاددہانی کادن ہے کہ ہم کتناآگے بڑھ چکے ہیں مستقبل میں ہمیں کہاں آگے جاناہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں نوجوانوں کی بڑی تعداد نے ووٹنگ میں حصہ لیا،نوجوان ہمارا احتساب کرتے ہیں ٗپاکستان میں نئی حکومت بھاری مینڈیٹ لے کر آئی ہے،امید ہے امریکا میں پاکستانی اپنے وطن کے مستقبل کیلئے جڑے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ اپنے وطن کی میراث سے جڑے رہنے کا یہی واحد راستہ ہے،امریکا میں پاکستانی سفارتخانہ اور قونصلیٹ پاکستانیوں کی خدمت کیلئے مستعد ہیں۔مقبوضہ کشمیر میں کشمیری قوم نہایت جوش و جذبے سے پاکستان کا یوم آزادی منایا گیا، کشمیری میڈیا سروس کے حوالے ایک ویڈیو بھی سامنے آئی ہے جس میں کشمیری بچے اور نوجوان پریڈ اور سلامی کی تقریب کی ریہرسل کررہے ہیں۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق حریت کانفرنس کے رہنما سید علی گیلانی نے پاکستانی قوم اور حکومت کو جشن آزادی کی مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ مستحکم پاکستان مسئلہ کشمیرکیحل کیلیے ناگزیر ہے، کشمیری قوم سیاسی اور سفارتی حمایت کرنے پر پاکستان کی شکر گزار ہے اور اس کی ترقی اور امن و استحکام کے لیے دعاگو ہے، امید کرتے ہیں کہ عمران خان کی آنے والی حکومت عدل و انصاف اور مدینہ جیسی سہولیات فراہم کرے گی۔دوسری جانب بھارتی حکومت نے پندرہ اگست کو اپنے یوم آزادی سے قبل مقبوضہ کشمیر میں سخت سیکورٹی انتظامات کرتے ہوئے وادی کو چھاؤنی میں تبدیل کردیا ہے۔ وادی میں بھارتی فوج کی اضافی نفری تعینات کردی گئی ہے اور جگہ جگہ کشمیریوں کو روک کر ان کی تلاشی لی جا رہی ہے۔جشن آزادی کے موقع پر ملک بھر میں شہروں اور قصبوں کو برقی قمقموں اور سبز ہلالی پرچم والی اور رنگا رنگ جھنڈیوں سے سجایا گیا ہے جبکہ پرچم کشائی کی بھی خصوصی تقاریب کا اہتمام کیا گیا۔ ملک بھر میں تمام سرکاری اور نجی عمارتوں پر قومی پرچم لہرایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ بلند و بالا و سرکاری عمارتوں پر چراغاں کا خصوصی اہتمام بھی کیا گیا۔گزشتہ رات 12 بجتے ہی ملک کے مختلف مقامات پر آتش بازی اور فاؤنٹین ڈانس کے شاندار مظاہرے بھی کیے گئے۔یوم آزادی کے موقع پر مختلف فاسٹ فوڈز، ملبوسات، موبائل کمپنیوں، ٹیکسی سروسز اور دیگر کمپنیوں نے عوام کے لیے خصوصی رعایتی پیکیجز کا اعلان بھی کیا ہے۔

جشن آزادی

اسلام آباد(آن لائن)صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ آج کا دن اس بات کی یاد دہانی ہے پاکستان کی قسمت کے فیصلے ووٹ کی پرچی سے ہوں گے اور پاکستان کے نمائندے وہی ہوسکتے ہیں جنہیں ووٹرز سند نمائندگی دیں۔ جناح کنونشن سینٹر اسلام آباد میں یوم پاکستان کے موقع پر پرچم کشائی کی مرکزی تقریب سے خطاب کے دوران صدر ممنون حسین نے کہا کہ پاکستان ان تصورات کی مجسم تصویر ہے جس کی آغوش میں ہم ہر لمحہ آزادی کا لطف اٹھاتے ہیں، یوم آزادی پر سبز ہلالی پرچم مزید بلند کرنے کی لگن بڑھ جاتی ہے۔ آج حقیقی جشن کا دن ہے اور میں پوری قوم کو دل کی گہرائیوں سے مبارک باد پیش کرتا ہوں۔صدر نے کہا کہ جشن آزادی اور عام انتخابات کے درمیان پیغام پوشیدہ ہے۔ یہ دن یاد دہانی ہے کہ وہی قانون کامیاب رہا جس میں عوام کی مرضی شامل رہی، پاکستان کی قسمت کے فیصلے ووٹ کی پرچی سے ہوں گے۔ پاکستان کے نمائندے وہی ہوسکتے ہیں جنہیں ووٹرز سند نمائندگی دیں، دعا ہے کہ پاکستان کی خدمت کرنے والوں کو آسانیاں عطا ہوں۔

صدر مملکت

مزید :

کراچی صفحہ اول -