تحریک انصاف کی حمایت کرنے پر نکے تھانیدار کامیاں بیوی پر تشدد خاتون کو نیم برہنہ کردیا

تحریک انصاف کی حمایت کرنے پر نکے تھانیدار کامیاں بیوی پر تشدد خاتون کو نیم ...
تحریک انصاف کی حمایت کرنے پر نکے تھانیدار کامیاں بیوی پر تشدد خاتون کو نیم برہنہ کردیا

  

فیصل آباد (ویب ڈیسک) ” وردی کا نشہ “ فیصل آباد کے نواحی تھانہ کھر ڑیا نوالہ کے علاقہ میں پاکستان تحریک انصاف کی حمایت کرنے اور بچوں کو پتھر مارنے سے منع کرنے پر ” باوردی نکے تھانیدار“ نے خاتون اور اس کے خاوند کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنا ڈالا، کپڑے پھاڑ ڈالے ، خاتون کو نیم برہنہ کر ڈالا، بالوں سے پکڑ کر سرباز اڑگھسیٹنے کی کوشش کی اور میاں بیوی پر اسلحہ تان لیا جان سے ماردینے کی دھمکیاں دیں اور ”نکے تھانیدار“ کی پی ٹی آئی قیادت کوگالیاں جبکہ خاتون اور اس کے شوہر کا کہنا ہے کہ تھانیدار ہمیں جھوٹے بے بنیاد مقدمات میں پھنسا کر گرفتار کروانے کی دھمکیاں بھی دے رہا ہے ہمیں اپنی اور اپنے بچوں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہیں اور درخواستیں دینے کے باوجود پولیس اپنے ” پیٹی بھائی“ اور اس کے دو نا معلوم ساتھیوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کر رہی۔ تھانہ کھرڑ یا نوالہ پولیس بھی ” پیٹی بھائی کی حمایتی بن“ گئی ہے ۔

روزنامہ خبریں کے مطابق مکو آنہ 229ر ب کی رہائشی تحریک انصاف کی خاتون رہنما کشور پروین اور اس کے شوہر اشراف اعوان نے تبایا کہ میں یکم اگست کی شب تقریباً 9 بجے گھر سے ملحقہ پی ٹی آئی کے دفتر میں بیٹھی تھی کہ اے ایس آئی سیماب اکبر کے بچے پتھر مار رہے تھے کہ میرے خاوند اشرف ان کو ایک دوسرے پر پتھر مارنے سے منع کیا تو تھانیدار وردی پہن کا گاڑی میں دو نامعلوم ساتھیوں کے ہمراہ موقع پر آگیا اور اس نے پسٹل لہراتے ہوئے مجھے اور میرے خاوند سمیت پی ٹی آئی قیادت کو گالیاں نکالنا شروع کردیں اور ہم دونوں میاں بیوی کو مارنا شروع کردیا۔ میرے کپڑے پھاڑ ڈالے جس سے میں نیم برہنہ ہوگئی وہاں موجود لوگوں نے میرا جسم ڈھانپا اور ہمیں قتل کردینے سمیت جھوٹے مقدمات میں پھنسوا کر جیل بھجوانے کی دھمکیاں دیں اور معززین نے باوری تھانیدار سیماب اکبر کی منت سماجت کر کے اس سے ہمارے جان بخشی کروائی۔

ایک سوال کے جواب میں میاں بیوی کا کہنا تھا کہ تھانیدار کا تعلق (ن) لیگ سے ہے اور ہم پی ٹی آئی کی حمایت کر رہے ہیں اس وجہ سے تھانیدار دشمنی پر اترآیا ہے اس نے کئی بار لڑائی جھگڑا کرنے کی کوشش کی ایک اور سوال کے جواب میں میاں بیوی نے بتایا کہ ہم نے اے ایس آئی کے خلاف کارروائی کیلئے آر پی او ،سی پی او ، ڈائریکٹر انٹی کرپشن فیصل آباد اور ایس پی جڑانوالہ سمیت ڈی ایس کھرڑیا نوالہ کو درخواستیں دیں مگر ہماری کوئی شنوائی نہیں ہو رہی پولیس افسران پیٹی بھائی کے حمایتی بن گئے ہیں۔

اس امر پر نکے تھانیدار کی پولیس گردی کا شکار ہونیوالے مظلوم میاں بیوی نے ویزر اعلیٰ پنجاب ، آئی جی پنجاب ، آر پی او اور سی پی او فیصل آباد سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری نوٹس لیکر اے ایس آئی اور اس کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج و گرفتار کر کے انصاف و تحفظ فراہم کیا جائے ورنہ آر پی او اور سی پی او آفس کے سامنے پر امن بھر پوراحتجاج کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /فیصل آباد