’’ بد قسمت اکلوتے بیٹے نے 82 سال کے بوڑھے باپ اور بہن کو گھر سے نکال دیا ‘‘بوڑھے بابے کی آخری خواہش جان کر آپ کے آنسو بھی نکل پڑیں گے

’’ بد قسمت اکلوتے بیٹے نے 82 سال کے بوڑھے باپ اور بہن کو گھر سے نکال دیا ...
’’ بد قسمت اکلوتے بیٹے نے 82 سال کے بوڑھے باپ اور بہن کو گھر سے نکال دیا ‘‘بوڑھے بابے کی آخری خواہش جان کر آپ کے آنسو بھی نکل پڑیں گے

  

پاکستانی معاشرے پر اس وقت مغرب کی یلغار ہے ،غیروں کے بڑہتے ہوئے رجحانات،ان کی عادات و اطوار کو اختیار کرنے کی وجہ سے ہم نت نئے مسائل کا شکار ہیں ،اسلامی ،اخلاقی ،تہذیبی ،تمدنی ،اور معاشرتی اقدار اس وقت زوروں سے زوال پذیر اور گراوٹ کی انتہاؤں کو چھو رہے ہیں، بوڑھے والدین کے ساتھ بڑھتی ہوئی بے رخی، ناقدری، توہین، تحقیر و تذلیل کے افسوسناک واقعات کا بڑھنا سب کے لئے لمحہ فکریہ ہے جب والدین بڑھاپے کی عمر کو پہچتے ہیں، عمر رسیدہ اور ضعیف ہوتے ہیںتو بد قسمت اولاد انہیں اپنے اوپر بوجھ اور مصیبت سمجھنے لگتی ہے، بات بات پر ان کو ڈانٹا، جھڑکنا، ذلیل و رسوا کرنا روز کا معمول بن جاتا ہے، ان کے ساتھ مل بیٹھنا، باتیں کرنا، انہیں وقت دینا تو دور کی بات ہے، ان کو دو ٹائم کی روکھی سوکھی روٹی دینے کو راضی نہیں ہوتے، ان کو بیماری لاحق ہو جائے علاج و معالجے پر رقم خرچ کرنا فضول سمجھتے ہیں۔اللہ تبارک وتعالی نے قرآن مجید میں والدین کے ساتھ حسن سلوک ،عجز و انکساری اور محبت وشفقت کے واضح اور روشن احکامات نازل فرمائے ہیں ،ان کو ’’اف ‘‘ تک کہنے کی اجازت نہیں دی ۔صحیح بخاری میں روایت ہے کہ حضور اکرمﷺ  سے ایک شخص نے سوال کیا :اللہ تبارک وتعالی کے نزدیک سب سے زیادہ محبوب عمل کونسا ہے ؟ آپ ﷺ نے فرمایا :نماز اپنے وقت میں ادا کرنا  ،سوال کرنے والے نے پھر دریافت کیااس کے بعد کونسا عمل ؟آپ ﷺ نے فرمایا :والدین کے ساتھ اچھا سلوک ۔۔۔۔ایک صحابی نے آپ ﷺ سے سوال کیا کہ والدین کا اولاد پر کیا حق ہے ؟آپﷺ  نے فرمایا وہ تیری جنت اور دوزخ ہیں ،ان کی اطاعت و فرمانبرداری میں جنت اور ان کی بے ادبی اور ناراضی میں تیری دوزخ ہے‘‘والدین چاہے مسلم ہوں یا کافر خدمت و اطاعت انکا حق ہے ، یہ کسی زمانے یا عمر میں مقید نہیں ،ہر حال ،ہر عمر میں والدین کے ساتھ اچھائی حسن سلوک واجب ہے ،والدین جب بوڑھے ہو جاتے ہیں ،انکی زندگی اولاد کے رحم وکرم پر ہوتی ہے ،اولاد کی ایک چھوٹی سی بات ،معمولی سی بے رخی والدین کے لیے ضرب کاری بن جاتی ہے ،بڑھاپے کے طبعی عوارض ،عقل وفہم کی کمی وجہ سے انکی طبیعت میں چڑچڑا پن آجا تا ہے ،بچوں کو چاہیے درگزر کریں ،انکی صحت اور کھانے پینے کا خیال رکھیں،ان کی ہر ممکن خواہش پوری کریں۔ہم آپ کو ملواتے ہیں ایک ایسے بزرگ ترین شخص سے جسے اس کے اکلوتے بیٹے نے  82 سال کے بوڑھے باپ اور بہن کو گھر سے نکال دیا، باپ لاہور کے ایک پارک میں رہنے پر مجبور بیٹی کو سالی کے گھر چھوڑ آیا اور اب وہ  مرنے سے پہلے بیٹی کی شادی کرنا چاہتا ہے۔

۔۔۔ویڈیو دیکھیں ۔۔۔۔

مزید :

ویڈیو گیلری -