ڈانس پارٹی پر چھاپے کے بعد زیر حراست لڑکیو ں کو تشد د کا نشانہ بنا نے پر لیڈی کا نسٹیبل سمیت 2اہلکار نو کر ی سے برخاست

ڈانس پارٹی پر چھاپے کے بعد زیر حراست لڑکیو ں کو تشد د کا نشانہ بنا نے پر لیڈی ...
ڈانس پارٹی پر چھاپے کے بعد زیر حراست لڑکیو ں کو تشد د کا نشانہ بنا نے پر لیڈی کا نسٹیبل سمیت 2اہلکار نو کر ی سے برخاست

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)ڈی آئی جی آپریشنزلاہورشہزاداکبرنے تھانہ فیکٹری ایریاکے علاقہ میں فارم ہاوس پرچھاپے کے دوران لڑکے اور لڑکیوں کی گرفتاری کے بعد ان پر پولیس اہلکاروں کی جانب سے تشدد کاسخت نوٹس لے کر کانسٹیبل عبدالمنان اورلیڈی کانسٹیبل نصرت عنایت کونوکری سے برخاست کردیاگیاجبکہ ایس ایچ او تھانہ فیکٹری ایریاانسپکٹر بہارحسین اورٹی اے ایس آئی ذوالفقارکوبھی انکوائری کے بعد محکمانہ سز ا دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق فیکٹری ایریاانسپکٹر بہارحسین اورٹی اے ایس آئی ذوالفقارو عملے نے فارم ہاوس پر چھاپہ مار کر لڑکے اور لڑکیوں کو گرفتار کر کے نشہ آور اشیا برآمد کیں بعد ازاں لیڈی کانسٹیبل نصرت عنایت نے کانسٹیبل کی مدد سے لڑکیوں کی ویڈیو بنوانے کے ساتھ انہیں تشدد کا نشانہ بنایا اور اس ویڈیو کو سوشل میڈیا پر شیئر کر دی۔ویڈیو وائرل ہوئی تو ڈی آئی جی نے اس پر ایس ایس پی آپریشن اسد سرفراز کو تحقیقات کا حکم دیا ،انکوائری میں کانسٹیبل عبدالمنان اورلیڈی کانسٹیبل نصرت عنایت کے خلاف الزامات ثابت ہو گئے جس پر انہیں ملازمت سے برخاست کر دیا۔ ڈی آئی جی آپریشنزلاہورشہزاداکبر کا کہناہے کہ کسی پولیس اہلکار کوکسی شہری سے بداخلاقی یا غلط رویہ اختیارنہیں کرنے دینگے۔

مزید :

جرم و انصاف -