معصوم بچوں کے سامنے تشدد کیاگیا، معاملہ اللہ اور عمران خان پر چھوڑتا ہوں،داؤد چوہان کی بے بسی نے قوم کو ہلا کر رکھ دیا

معصوم بچوں کے سامنے تشدد کیاگیا، معاملہ اللہ اور عمران خان پر چھوڑتا ...
معصوم بچوں کے سامنے تشدد کیاگیا، معاملہ اللہ اور عمران خان پر چھوڑتا ہوں،داؤد چوہان کی بے بسی نے قوم کو ہلا کر رکھ دیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) تحریک انصاف کے ایم پی اے عمران علی شاہ کی جانب سے تشدد کانشانہ بننے والے سرکاری افسر داؤ د چوہان نے کہا ہے مجھے میرے معصوم بچوں کے سامنے تشدد کا نشانہ بنایا گیا ، بہت پریشان ہوں،معاملہ اللہ اور عمران خان پر چھوڑتاہوں۔

جیونیوز کے پروگرام ’’آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے داؤد چوہان نے کہا کہ ایم پی اے عمران علی شاہ کی جانب سے تشدد کرنے پر میں بہت پریشان ہوں۔ میں بچوں والا اور پوتے ،پوتیوں والا ہوں اور میں مار کھاتے ہوئے پوچھتارہاکہ آپ کون ہیں؟ اس واقعہ پر تحریک انصاف کے رہنماؤں کی جانب سے بہت افسوس کا اظہار کیاگیا ۔ میں نے یہ بات اللہ تعالیٰ اور عمران خان پر چھوڑ ی کیونکہ مجھے پتہ چلا ہے کہ وہ ایسے معاملات میں کافی سخت ہیں۔ معاف کرنے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ہمارے معاشرے میں ایسے معاملات میں ہم لوگ کیا کر سکتے ہیں۔میں نہ تو ایسا پیسے والا ہوں اورایسے میں کیا کرسکتا تھا ؟ میں دشمنی کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ میں عمران خان سے صرف یہی درخواست کر سکتا ہوں کہ ابھی تو پانچ سال چلنے ہیں۔ میں اس پر کیا ایکشن چاہوں گا ؟ کیا میں یہ کہوں کہ عمران علی شاہ کو اسمبلی سے نکال دیں ؟ عمران علی شاہ جب میرے گھر آتے تو وہ بالکل نہیں بول رہے تھے ۔ میں نے ان سے پوچھا کہ آپ نے مجھے کیوں مارا جس پر انہوں نے کہا کہ’’ مجھے افسوس ہے کہ میں نے آپ کو مارا ، آپ میرے باپ کی عمر کے ہیں‘‘ انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ اس وقت چار بچے تھے جن میں سے ایک کی عمر ساڑھے تین سال تھی اور دوسرا چھ سال کا تھا جب عمران شاہ نے مجھے تشدد کانشانہ بنایا ۔

مزید :

قومی -جرم و انصاف -