کشمیر کی آزادی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے،عمائدین

کشمیر کی آزادی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے،عمائدین

  

مہمند (نمائندہ پاکستان) مہمند، ضلع مہمند میں چودہ اگست پرچم کشائی تقریب سے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کی آمد پر مشران نے پروگرام سے واک آؤٹ کیا۔ ڈپٹی کمشنر مشران کو منانہ سکے۔ جب تک انضمام میں ہمیں اعتماد میں نہیں لیئے گئے ہم پولیس آفیسر کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں۔ ہم نے ملک کی بقاء اور سلامتی کیلئے جانی و مالی قربانی دی ہے۔ اور کشمیر کی آزاد میں بھی ہم نے پہلے بھی قربانیاں دی ہیں اور آئندہ بھی کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے۔ تفصیلات کے مطابق ڈپٹی کمشنر آفس غلنئی کے سامنے پرچم کشائی تقریب میں اُس وقت بدمزگی پیدا ہوئی جب ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر تقریب میں شرکت کیلئے آئے۔ تو مشران نے تقریب سے فوری واک آؤٹ کر کے چلے گئے۔ ضلعی انتظامیہ نے مشران کے ساتھ طویل مزاکرات کئے مگر وہ ماننے کو تیار نہ تھے۔ کیونکہ اُن کا موقف تھا کہ انضمام کے وقت ہمیں اعتماد میں نہیں لئے گئے ہے ہم پولیس نظام و آٖفیسرز کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں ہے۔ کیونکہ دہشت گردی کی جنگ میں ہم نے بے شمار جانی و مالی قربانیاں دی ہیں۔ مگر ہمیں یکسر نظر انداز کر کے ہم پر انضمام مسلط کیا گیا جو ہم ہر گز نہیں مانتے۔ ہم کسی کے ذات کی مخالفت نہیں کرتے۔ ہم نے ہر سال اس تقریب میں بھر پور انداز میں شرکت کی ہے۔ مگر پہلے سے پولیس نظام سے بائیکاٹ کی وجہ سے ہم اُن کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں ہے۔ کشمیر میں ہم نے پہلے بھی قربانی دی ہے اور آئندہ بھی کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے۔ مگر ہمارا موقف تھا کہ ہمارا پولیس نظام سے بائیکاٹ رہیگا۔ مشران نے مزید کہا کہ حکومت جلد از جلد تمام مشران کو اعتماد میں لیکر قبائلی اضلاع کیلئے بہتر فیصلے کریں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -