پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنانے کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے ،ڈاکٹر رفیق احمد

پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنانے کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے ،ڈاکٹر ...

  

لاہور(سٹی رپورٹر) تحریکِ پاکستان کے سرگرم کارکن اور نظریہَ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا ہے کہ پاکستانی اس یومِ ;200;زادی پر تجدید عہد کرتے ہیں کہ ہم پاکستان کو ترقی یافتہ اقوام کی صف میں کھڑا کرنے کےلئے تن من دھن کی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے، کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے ۔ کشمیر زیادہ دیر تک ظالم کے پنجہَ استبداد میں نہیں رہ سکتا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایوانِ کارکنانِ تحریک پاکستان لاہور میں پاکستان کی آزادی کے 72سال مکمل ہونے پر منعقدہ خصوصی تقریب کے دوران کیا ۔ تقریب کے مہمانان خاص تحریک پاکستان کے گولڈ میڈلسٹ کارکنان تھے ۔ تقریب کا اہتمام نظریہَ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کیا تھا ۔ پروگرام کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک ، نعت رسول مقبول;248; اور قومی ترانہ سے ہوا ۔ قاری محمدداءود نقشبندی نے تلاوت کلام پاک کی سعادت حاصل کی ‘ محمد توقیرگوندل نے بارگاہ رسالت مآب;248; میں ہدیہَ عقیدت پیش کیا ۔ الحاج حافظ مرغوب احمد ہمدانی نے کشمیری ترانہ پیش کیا ۔ پروگرام کی نظامت کے فراءض سیکرٹری نظریہَ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید نے انجام دئیے ۔ سابق چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت و چیئرمین تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ چیف جسٹس (ر)میاں محبوب احمد نے کہا کہ ہ میں قومی سطح پر نظم و ضبط کی ضرورت ہے ۔ قومی ترقی میں نظم و ضبط کی حیثیت ریڑھ کی ہڈی کی سی ہے ۔ ملک و قوم یا انفرادی سطح پر ترقی کرنے کےلئے ہ میں تو کچھ قواعد و ضوابط پر عمل کرنا ہوتا ہے ۔ اللہ تعالیٰ ہمارا حامی و ناصر ہو کہ ہم پاکستان کو اقوام عالم میں بہترین مقام دلا سکیں ۔ روزنامہ پاکستان کے چیف ایڈیٹر صحافی مجیب الرحمن شامی نے کہا کہ اس مرتبہ اگست کے مہینے میں پاکستانی قوم نے دو عیدیں منائی ہیں ۔ ایک عید قربان اور دوسری عید ;200;زادی کی عید ہے لیکن یہ دونوں عیدیں ہم نے بڑے بوجھل دل کے ساتھ منائی ہیں ۔ اس بوجھل پن کی وجہ ہمارے کشمیری بہن بھائیوں پر ہونے والے عدیم النظیر مظالم ہیں ۔ مقبوضہ وادی جموں و کشمیر میں مواصلات اور رابطے کے تمام ذراءع ناپید ہیں ۔ ہوائی اڈے‘ بس اڈے‘ گلی‘ بازار ہر چیز کرفیو کا شکار ہے ۔ وہاں ضروریات زندگی اور دواءوں کی قلت پیدا ہو چکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تحریک پاکستان ابھی جاری و ساری ہے کہ ابھی کشمیر کو ;200;زادی نصیب نہیں ہوئی ۔ ;200;ج ہماری سیاسی و عسکری قیادت کا کڑا امتحان ہے کہ ہم کشمیر کے محاذ پر کیسے یک زبان ہو کر اپنی ;200;واز دنیا تک پہچانے میں کامیاب ہوتے ہیں ;238; اس وقت ملک و قوم کو یکجہتی کی ضرورت ہے ۔ قائداعظم;231; نے اپنی زندگی بھرپور نظم و ضبط کے ساتھ رہتے ہوئے گزاری ۔ ہ میں ان کی زندگی کو مشعل راہ بنانا چاہیے تا کہ پاکستان خوشحال اور مستحکم ہو سکے ۔ مجھے امید ہے کہ پاکستان اپنے مقاصد حاصل کرے گا اور کشمیر میں ;200;زادی کا سورج جلد از جلد طلوع ہو گا ۔ وائس چیئرمین نظریہَ پاکستان ٹرسٹ میاں فاروق الطاف نے کہا کہ تحریک پاکستان کے رہنما اور کارکنان اعلیٰ کردار کے حامل انسان تھے جو منافقت اور جھوٹ سے دور تھے ۔ ہ میں بھی اپنے کردار کو بلند بنانا ہو گا ۔ قائداعظم;231;پاکستان میں ایک مثالی اسلامی معاشرہ قائم کرنے کے خواہاں تھے جہاں ہر ایک کو آگے بڑھنے کے یکساں مواقع میسر ہوں ۔ سابق وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا کہ قائداعظم;231; نے ہ میں ’’ایمان ، اتحاد ، تنظیم‘‘ کا درس دیا ۔ ہ میں قائداعظم;231; کے سنہرے اصولوں پر عمل کرنا چاہئے ۔ سجادہ نشین آستانہ عالیہ علی پور سیداں پیر سید منور حسین شاہ جماعتی نے کہا کہ امیر ملت پیر سید جماعت علی شاہ;231; نے قائداعظم;231; کا بھرپور ساتھ دیا ۔ قائداعظم;231; مکمل اسلامی ذہن کے حامل تھے اور وہ پاکستان میں اسلامی نظام نافذ کرنے کے خواہاں تھے ۔ سجادہ نشین آستانہ عالیہ شرقپور شریف میاں ولید احمد شرقپوری نے کہا کہ قائداعظم;231; نے فرمایا تھا کہ مسلمان مصیبت میں گھبرایا نہیں کرتا ۔ اب خطہ کشمیر کے مسلمان مصیبت میں مبتلا ہیں تاہم ہ میں امید ہے کہ اس مصیبت سے وہ کامیاب ہو کر نکلیں گے ۔ ڈائریکٹر جنرل محکمہ اوقاف و مذہبی امور حکومت پنجاب سید طاہر رضا بخاری ۔ ممتازکالم نگار ڈاکٹر محمد اجمل نیازی ، سیکرٹری نظریہَ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید نے بھی خطاب کیا ۔ پروگرام کے دوران کارکنان تحریک پاکستان کے اعتراف خدمت میں انہیں پھول پہنائے گئے ۔ قبل ازیں ایوان کارکنان تحریک پاکستان‘ لاہور کے احاطہ میں پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد اور چیف جسٹس (ر) میاں محبوب احمد نے کارکنا ن تحریک پاکستان کے ہمراہ پرچم کشائی کی رسم ادا کی ۔ پنجاب پولیس کے بینڈ نے خوبصورت دھن پر قومی ترانہ پیش کیا ۔ بعدازاں مادرملت;231; پارک میں موجود یادگار شہدائے پاکستان پر حاضری دی گئی ، وہاں پھولوں کی چادر چڑھائی گئی جبکہ پیر سید منور حسین شاہ جماعتی نے شہدائے تحریک پاکستان کی مغفرت و بلندیَ درجات اور وطن عزیز کی ترقی وخوشحالی کیلئے دعا کروائی ۔ پرچم کشائی کی رسم اور خصوصی تقریب میں تحریک پاکستان کے گولڈ میڈلسٹ کارکنان کرنل(ر) محمد سلیم ملک، سید عبدالمجید( راول پنڈی)، ایم کے انور بغدادی، رانا سجاد جالندھری، عبدالجبار،ماسٹر ظہور الحسن (حیدرآباد)، غلام عباس (کوءٹہ)، محمد فیاض، صوفی اللہ دتہ، محمد عالم (ننکانہ)، نثار اکبر سیٹھی (پشاور) اور میاں ابراہیم طاہرشریک تھے جبکہ اس موقع پرچیئرمین مولانا ظفر علی خان ٹرسٹ خالد محمود، ممتاز سیاسی رہنما چودھری نعیم حسین چٹھہ ، صدر نظریہَ پاکستان فورم آزاد کشمیر مولانا محمدشفیع جوش، سمیحہ راحیل قاضی، کرنل(ر) عبدالرزاق بگٹی، بیگم خالدہ جمیل، بریگیڈئیر(ر) لیاقت علی طور، کشمیری رہنما فاروق خان آزاد،عارفہ صبح خان،کاشف ادیب جاودانی، انجینئر طفیل ملک، رانا طارق محمود، نواب برکات محمود، ، طلبا و طالبات ، اساتذہَ کرا م سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے خواتین وحضرات کی بہت بڑی تعداد موجود تھی ۔ پروگرام کے آخر میں تقریبات یوم آزادی کے سلسلے میں تعلیمی اداروں کے طلبا وطالبات کے مابین ملی نغمے سنانے کے مقابلہ کے انعام یافتہ طلباوطالبات میں اسناد تقسیم کی گئیں ۔ قبل ازیں ایوان قائداعظم;231; ،لاہور میں پرچم کشائی ہوئی جس میں نظریہَ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین میاں فاروق الطاف اور سیکرٹری شاہد رشید نے پرچم کشائی کی رسم ادا کی ۔ اس موقع پر طالبعلموں نے قومی ترانہ اور ملی نغمے سنائے ۔ طالبعلموں میں قومی پرچم ،بیج سٹیکرز اور قائداعظم;231; کے پورٹریٹ تقسیم کیے گئے ۔

ڈاکٹر رفیق احمد

مزید :

صفحہ آخر -