پاکستانی حکومت بھارت کیساتھ تمام شعبوں میں تعاون معطل کردے، اویس لغاری

 پاکستانی حکومت بھارت کیساتھ تمام شعبوں میں تعاون معطل کردے، اویس لغاری

  

ڈیرہ غازی خان (سٹی رپورٹر)انڈین ٹینس ٹیم کے تحفظ کی گارنٹی مانگنے والوں سے پہلے مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں کے جان و مال کے تحفظ کی گارنٹی لی جائے پھر انڈین ٹینس ٹیم کو پاکستان میں ہونے والے ورلڈ کپ میں حصہ لینے کی اجازت دی(بقیہ نمبر33صفحہ12پر)

 جائے یہ بات پاکستان مسلم لیگ ن پنجاب کے جنرل سیکرٹری سابق وفاقی وزیر سردار اویس احمد خان لغاری نے بھارتی ٹینس ٹیم کے کپتان کے پاکستان میں ٹورنامنٹ میں حصہ لینے کے لئے تحفظ کی گارنٹی لینے کے مطالبہ کے جواب میں ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہا کہ بھارتی سامراج ایک طے شدہ منصوبہ کے تحت کھیل ثقافت تجارت وغیرہ کے نام پر پاکستانیوں کے جذبہ ایمانی اور جذبہ حریت کو کمزور کر رہاہے اور بعض نام نہاد لبرل پاکستانی بھی اچھے ہمسائے کا بھاشن دے کر دانستہ یا غیر دانستہ طورپر بھارت کی اس سازش میں شریک ہیں.اویس لغاری نے مزید کہا کہ اب پاکستان کو ہر شعبہ میں بھارت کا بائیکاٹ کرنا چاہیے یہ کبھی اچھا ہمسایہ نہیں بن سکتا بلکہ ہمیشہ بدترین دشمن ہی ثابت ہوگا یہ ہمیں بار بار ڈس رہا ہے اور ہم اچھی ہمسائیگی کے لئے مرے جا رہے ہیں اور نیا باڈر کرتارپور کھولنے کے لئے دن رات جتے ہوئے ہیں اویس لغاری نے حکمرانوں اور مقتدرحلقوں سے مطالبہ کیا ہے کہ جب تک بھارت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے مذاکرات پر تیار نہ ہو اس وقت تک پاکستان کو تمام شعبوں میں تعاون معطل کر دینا چاہئے ویسے بھی یہ تعاون پاکستان کے مفاد میں کم ہوتا ہے بھارت زیادہ فائدہ حاصل کرتا ہے یہی وجہ ہے کہ بھارت تجارت کے لیے ہمہ وقت تیار رہتا ہے لیکن کشمیر کے مسئلہ پر حیلے بہانے بناتا رہتا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -