مقبوضہ کشمیر میں پابندیوں کے باوجود پاکستان کا یوم آزادی جوش و جذبہ سے منایا گیا

مقبوضہ کشمیر میں پابندیوں کے باوجود پاکستان کا یوم آزادی جوش و جذبہ سے منایا ...

  

 سرینگر (مانیٹرنگ ڈیسک) مقبوضہ کشمیر میں قابض فوج کی پابندیوں کے باوجود کشمیری عوام نے پاکستان کا یوم آزادی 14 اگست پورے جوش جزبے سے منایاجبکہ آج (15 اگست) کو بھارت کے یوم آزادی پر پوری وادی میں یوم سیاہ منایا جائے گا۔فوجی محاصرے کے باوجود سری نگر کے در و دیوار پر پاکستان جیوے کے نعرے درج کر دیئے گئے۔ کشمیری عوام نے کہا ہے کہ پاکستان کے ساتھ ان کا رشتہ لازوال ہے۔ حریت کانفرنس کی اپیل پر کشمیری یوم آزادی ِ پاکستان منا رہے ہیں۔دوسری جانب بھارت کے غیر قانونی زیر تسلط جموں وکشمیر میں قابض انتظامیہ نے پورے مقبوضہ علاقے خاص طورپر سرینگر میں لوگوں کوآج 15اگست کو بھارت کے یوم آزادی کے موقع پر بھارت مخالف مظاہرے کرنے سے روکنے کیلئے پابندیاں مزید سخت کر دی ہیں۔سرینگر کے کرکٹ اسٹیڈیم اوراس کے نواحی علاقوں میں خصوصی پابندیاں عائدکی گئی ہیں جہاں یوم آزادی کی مرکزی تقریب منعقد ہوگی۔پولیس اور پیراملٹری سینٹرل ریزرو پولیس فورس کے اہلکاروں نے سرینگر اور وادی کے دیگر حصوں میں اہم مقامات پر گشت، گاڑیوں کی تلاشیوں اور جامہ تلاشیوں کا سلسلہ تیز کر دیا ہے۔ایک عینی شاہد نے بتایاہے کہ بٹہ مالو سے ڈلگیٹ تک سڑک کے ایک طرف اور ہری سنگھ ہائی سٹریٹ سے رام منشی باغ تک دوسری طرف پولیس نے کم سے کم  30 سے 40رکاوٹیں کھڑی کر دی ہیں جبکہ موٹرسائیکل سواروں اور گاڑیوں کے ڈرائیوروں کو روک کر انکی تلاشی لی جاتی ہے اور انکے شناختی کارڈ طلب کئے جاتے ہیں۔سرینگر سمیت وادی کشمیر کے مختلف مقامات پر بھارتی فورسز کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔ 

کشمیری جزبہ

مزید :

صفحہ اول -