کچہر یوں میں رجسٹرڈجاری نہ ہونے پر جعلی اشٹام پیپرز کی فروخت 

کچہر یوں میں رجسٹرڈجاری نہ ہونے پر جعلی اشٹام پیپرز کی فروخت 

  

  

لاہور (عامر بٹ سے) ڈپٹی کمشنر لاہور کے دفتر خزانہ برانچ 44روز گزر جانے کے باوجود اشٹام سیلرز کو رجسٹرڈ ایشو نہ کر سکی۔ جعلی اشٹام بیچنے والا مافیا بھی سرگرم ہوگیا، ضلع لاہور کی تینوں کچہریوں میں رجسٹرڈ نہ ہونے کے باوجود غیر قانونی طور پر اشٹام پیپرز جاری ہورہے ہیں۔ بورڈ آف ریونیو کے شعبہ سٹیمپ برانچ اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو کا سٹاف بھی جعلی اشٹام پیپرز کی فروخت روکنے میں ناکام نظر آیا۔ روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق صوبائی دارالحکومت میں موجود کینٹ کچہری، ضلع کچہری اور ماڈل ٹاؤن کچہری میں جعلی اشٹام پیپرز بیچنے والوں کا گڑھ بن گئی۔ سر عام دن رات کی بنیاد پر غیر قانونی طور پر اشٹام پیپرز کا فروخت کا سلسلہ جاری ہے۔اس ضمن میں ممبر ٹیکسیز پنجاب کا کہنا تھا کہ روزنامہ پاکستان کی اس نیوز کی روشنی میں باقدعدہ کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

اور اس حوالے سے ریڈنگ ٹیم بھی تشکیل دی جائے گی جو کہ جعلی اشٹام پیپر فروخت کرنے والوں کو گرفتار کرے گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -