تبدیلی جھنڈے اٹھا کر نہیں عوامی خدمت سے آئیگی:چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ

تبدیلی جھنڈے اٹھا کر نہیں عوامی خدمت سے آئیگی:چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ

  

 کوئٹہ(این این آئی) چیف جسٹس بلوچستان ہائی کورٹ جسٹس جمال مندوخیل نے کہا ہے کہ آئین کی پاسداری کئے بغیر ملک کا نظا م ٹھیک کرنا نا ممکن ہے،تبدیلی جھنڈے اٹھانے نہیں عوامی خدمت سے آئیگی۔ ہم نے آزادی کا حق ادا نہیں کیا۔آج جنہیں غدار کہا جارہا ہے کل وہ برسراقتدا ر ہوتے ہیں ہمیں فیصلہ کرنا ہوگا کہ آئین پر عملدآمد کرنا ہے۔ یہ بات انہوں نے بلوچستان ہائیکورٹ میں پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پرانہوں نے مزید کہا کہ ملک میں دو طبقے ہیں ایک وہ جو کہتے ہیں کہ آئین بالادست ہے دوسرا وہ جو آئین کو کاغذ کا ٹکرا تصور کرتے ہیں۔ اگر آئین نہیں ہوگا توملک میں کوئی نظام نہیں ہوگا ہم نے آئین اور عوام کو ہمیشہ ردی کی ٹوکری کا حصہ بنایا۔ ارکان پارلیمنٹ سے پوچھا جائے کہ کیا وہ آئین کا مطالعہ اور تیاری کے ساتھ اسمبلی اجلاسوں میں آتے ہیں۔اسمبلی میں آئین و قانون سازی کی بات نہیں ہوتی ہم آئین سے ہٹ کر چل رہے ہیں۔ جب تک آئین کی پاسداری نہیں ہوگی ہم پستی کی طرف جائیں گے۔ ہمارے آباؤ اجداد نے ملک کے لئے جو قربانیاں دی تھیں انکے بدلے ہمیں خلوص نیت سے کام کرتے ہوئے اس آزادی کا حق ادا کرنا ہوگا جس دن ہم نے یہ سب کردیا ہم حقیقی طور پر جشن آزادی منائیں گے۔

جسٹس جمال مندوخیل

مزید :

صفحہ اول -