اسلام آباد ہائیکورٹ نے بغاوت پر اکسانے کے کیس میں شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست قابل سماعت قرار دیدی

اسلام آباد ہائیکورٹ نے بغاوت پر اکسانے کے کیس میں شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ ...
اسلام آباد ہائیکورٹ نے بغاوت پر اکسانے کے کیس میں شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست قابل سماعت قرار دیدی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) اسلام آباد ہائیکورٹ نے بغاوت پر اکسانے کے مقدمے میں شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی  پولیس کی درخواست قابل سماعت قرار  دیدی ۔ 

اسلام آباد ہائیکورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق  نے  بغاوت پر اکسانے کے مقدمے میں شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی پولیس کی درخواست پر سماعت کی ،ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد جہانگیر جدون ، کیس کے تفتیشی افسر  اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش ہوئے ۔   ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد جہانگیر جدون نے عدالت میں کہا کہ شہباز گل نے ٹی وی چینل پر بیان دیا ،شہباز گل کے بیان میں اداروں کو ٹارگٹ کیا گیا  جس پر  شہباز گل کے بیان کا حکومت نے سنجیدہ نوٹس لیا  اور مقدمہ درج کیا۔

عدالت نے استفسار کیا کہ سیشن کورٹ میں کتنا ریمانڈ ہوا ؟، ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد جہانگیر جدون نے کہا کہ شہباز گل کا 2 روزہ جسمانی ریمانڈ دیا گیا ،جوڈیشل مجسٹریٹ اور سیشن جج نے شہباز گل کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم دیا ،ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور ایڈیشنل سیشن جج کے فیصلوں کے خلاف درخواست دائر کی گئی۔ عدالت نے استفسار کیا کہ آپ یہ کہہ رہے ہیں کہ ملزم کا مزید فزیکل ریمانڈ ضروری ہے ؟آپ نے مزید فزیکل ریمانڈ میں کیا کرنا ہے ؟۔حقیقت یہ ہے کہ آپ کی ایک نظرثانی اپیل خارج ہوئی ، دوسرا فزیکل ریمانڈ ختم ہو چکا ہے ۔

ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد نے بتایا کہ شہباز گل نے لیپ ٹاپ اور ڈیوائسز برآمد کرنی ہیں ۔ 

عدالت نے  سماعت کل تک ملتوی کر دی ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -