یورپ میں ہیٹ ویوز، خشک سالی کی شدت بڑھ گئی

  یورپ میں ہیٹ ویوز، خشک سالی کی شدت بڑھ گئی
  یورپ میں ہیٹ ویوز، خشک سالی کی شدت بڑھ گئی

  

لندن(این این آئی)متعدد یورپی ممالک بشمول اسپین، جرمنی، پرتگال، اٹلی، نیدرلینڈز اور برطانیہ کو اس سال موسم گرما کے دوران خشک سالی کا سامنا ہے جس کے باعث پانی کے استعمال کو محدود کرنے کے لیے مختلف پابندیاں لگائی گئی ہیں۔خشک سالی کیساتھ ساتھ ہیٹ ویوز سے یورپ میں موسمیاتی تبدیلیوں کے خطرات زیادہ بڑھ گئے۔میڈیارپورٹس کے مطابق یورپی کمیشن کے جوائنٹ ریسرچ سینٹر نے خبردار کیا کہ اس ہفتے خشک سالی کی شدت مزید بڑھ جائے گی اور ممکنہ طور پر براعظم کا 47 فیصد حصہ اس سے متاثر ہوسکتا ہے۔محققین نے بتایا کہ 2018 کی خشک سالی انتہائی سنگین تھی اور گزشتہ 500 برسوں کے دوران ایسا دیکھنے میں نہیں آیا تھا مگر اس سال ہمارے خیال میں صورتحال اس سے بھی زیادہ بدتر ہے۔ آئندہ 3 ماہ کے دوران مغربی اور وسطی یورپ میں خشک سالی کا خطرہ بہت زیادہ ہے۔موسمیاتی ماہرین نے بتایا کہ موجودہ صورتحال طویل عرصے تک برقرار رہنے والے خشک موسم کا نتیجہ ہے۔موسم گرما میں ہم اس کا اثر زیادہ محسوس کررہے ہیں مگر حقیقت تو یہ ہے کہ خشک سالی کا عمل سارا سال جاری رہا۔ شمالی افریقہ سے یورپ تک غیرمعمولی گرم ہوا پہنچی جس سے گرمی کا دورانیہ بڑھ گیا۔

مزید :

بین الاقوامی -