سیکیورٹی کی صورتحال میں بہتری تک امریکی فوج اردن میں رہے گی

سیکیورٹی کی صورتحال میں بہتری تک امریکی فوج اردن میں رہے گی

واشنگٹن (آئی اےن پی )امریکا نے اردن میں موجود اپنے 1500 فوجیوں کو سیکیورٹی کی صورتحال بہتر ہونے تک وہیں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔وائٹ ہاﺅس کےمطابق عمان کو ہمسایہ ملک شام میں جاری خانہ جنگی کی وجہ سے سیکیورٹی خدشات درپیش ہیں جس کے باعث فی الوقت پندرہ سو امریکی فوجیوں کو اردن میں ہی رہنے دیا جا رہا ہے۔امریکا کے قریبی اتحادی شاہ عبداللہ ثانی کی حکومت کو ان دنوں شام میں خانہ جنگی کی صورتحال کے باعث مہاجرین کے سیلاب کا سامنا ہے۔وائٹ ہاوس کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکی فوجی، عمان حکومت کے ساتھ مکمل کوارڈی نیشن کے بعد اردن میں ہی موجود رہیں گی۔ یہ فوج سیکیورٹی کی صورتحال میں بہتری یا اس وقت تک اردن میں ہی تعینات رہے گی کہ جب عمان خود اس بات کا فیصلہ نہیں کرتا کہ امریکی فوج کی اردن میں مزید ضرورت نہیں رہی۔کانگریس میں پیش کردہ وائٹ ہاوس کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ امریکی فوجی نائیجریا میں بھی تعینات ہیں جہاں وہ فرانسیسی فوج کو مالی میں کئے جانے والے آپریشن کے لئے خفیہ معلومات جمع کرنے میں مدد فراہم کر رہی ہے تاکہ شمالی مالی میں اسلامی شدت پسندوں کی بڑھتی ہوئی کارروائیوں کے آگے بند باندھا جا سکے۔اردن میں موجود امریکی فوجی دستے میزائل شکن پیڑیاٹ سسٹم اور لڑاکا جہازوں پر مشتمل ہیں۔

مزید : عالمی منظر