تجاوزات کیخلاف آپریشن کے حوالے سے اجلاس

تجاوزات کیخلاف آپریشن کے حوالے سے اجلاس

  

پبی ( نما ئندہ پاکستان) اسسٹنٹ کمشنر پبی حلیمہ عبید کے زیر صدارت پبی بازار میں تجا وزات کے خا تمے اور ان کے خلاف بھر پور آپریشن کر نے کے حوا لے سے اجلاس منعقد ہوا جس میں اے اے سی پبی محمد ایوب این ایچ اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرضیاء اللہ خان این ایچ اے کے اسما عیل خان ہا ئی وے پو لیس کے انسپکٹر انجمن تا جران پبی کے صدر حا جی اورنگز یب پر یس سیکر ٹری محمد الیاس پبی حا جی رحمت الیاس احمد پر یس کلب کے نما ئندوں نے شرکت کی اسسٹنٹ کمشنر حلیمہ عبید نے کہا کہ تجا وزات کے خلاف وزیر اعظم پا کستان اور سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق آپریشن جا ری ہے پبی بازار میں جن افراد نے ناجائز تجاوزات بنا ئیں ہیں اس کے خلاف این ایچ اے آپریشن کر رہی ہے اور انتظا میہ ان کو ہر قسم کی سہو لیات فر اہم کر رہی ہے این ایچ اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر نے کہا کہ ہمارا کسی کے ساتھ کو ذا تی دشمنی نہیں ہے ہم سر کاری ملا زم ہے اور جو حکم ہمیں سٹیٹ سے ملا تا ہے ہم اس پر کام کر تے ہیں تجا وزات کی و جہ سے عوام کو مشکلات کا سا منا کر نا پڑ تا ہے انجمن تا جران پبی کے صدر حا جی اورنگز یب اور پر یس سیکر ٹری محمد االیاس نے کہا کہ ہم بھی تجا وزات کا خا تمہ چا ہتے ہیں اس آپریشن میں ہم این ایچ اے اور ضلعی انتظا میہ کے ساتھ بھر پور تعاون کر ینگے اور جس طرح اے سی صا حبہ حلیمہ عبید چا ہتی ہے اس طرح آپریشن کر ینگے ا س کے ساتھ ہم کھڑے ہو نگے لیکن اس کے لئے ہمیں کچھ مہلت چا ہئے کہ تمام دکا نداران رضا کا را نہ طور پر خود تجا وزات ختم کر یں اگر اس کے بعد کسی نے تجاوزات قا ئم کی تو اس کے خلاف بھر پور آپریشن کیا کریں انہوں نے کہا پبی بازار کو روز انہ ہزاروں افراد جن میں بچے خوا تین بھی شا مل ہیں آتے ہیں ان کی سہو لت کے لئے پبی بازار میں کو ئی واش روم اور پینے کے لئے صا ف پا نی نہیں ہے اس کا بھی بندو بست کریں اسسٹنٹ کمشنر پبی حلیمہ عبید نے انجمن تا جران کو دو ہفتے کے اندر اندر تمام تجاوزات ختم کر نے کی مہلت دیاور کہا کہ کل سے آپ اس پر کام شروع کریں جتنی جلد ہو سکیں کام مکمل کریں اس کے بعد این ایچ اے تجا وزات کے خلاف بھر پور آپریشن کر یگی اس میں کسی کے ساتھ کو ئی رعا یت نہیں کی جا ئے گی انہوں نے این ایچ اے افسران کو پبی بازار میں واش رومز بنا نے اور پینے کا صاف پا نی کی فر اہمی کے لئے اقدا مات کر نے کی ہدا یت کی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -