اثاثے درست ظاہر نہ کرنے اور دھاندلی کرنے پر وزیراعلیٰ پنجاب کو ناکام قرار دینے کی درخواست پر سماعت 15 جنوری تک ملتوی

اثاثے درست ظاہر نہ کرنے اور دھاندلی کرنے پر وزیراعلیٰ پنجاب کو ناکام قرار ...

  

ملتان(وقائع نگار) جج الیکشن ٹربیونل ہائیکورٹ ملتان بینچ نے اثاثے درست(بقیہ نمبر37صفحہ7پر )

ظاہر نہ کرنے اور دھاندلی کرنے پر وزیراعلیٰ پنجاب کو ناکام قرار دینے کی درخواست پر سماعت کو15 جنوری تک ملتوی کرنے کا حکم دیا ہے۔ فاضل عدالت میں پی پی 286 ڈی جی خان سے آزاد امیدوار سردار محمد اکرم خان ملغانی نے درخواست دائر کی تھی کہ اس نے آزاد امیدوار کی حیثیت سے حصہ لیا جس میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان احمد بزدار کو تحریک انصاف کے ٹکٹ پر کامیاب قرار دیا گیا جبکہ کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے موقع پر وزیراعلیٰ نے اپنے اثاثوں کی درست مالیت ظاہر نہیں کی ہے اور کامیابی کے بعد درخواست گزار نے دوبارہ گنتی کے لئے ریٹرننگ آفیسر کو درخواست دی جو زائد المیعاد قرار دے کر خارج کردی گئی ہے جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب کی بطور ایم پی اے کامیابی کو منسوخ کیا جائے اور درخواست گزار کو کامیاب امیدوار قرار دیا جائے کیونکہ ریٹرننگ آفیسر کی جانب سے نتیجہ درست طور پر تیار نہیں کیا گیا ہے اور مقررہ28 جولائی کی تاریخ سے دو روز قبل دوبارہ گنتی کی درخواست دینے کے باوجود بدنیتی سے درخواست مسترد کی گئی ہے نیز کامیاب امیدوار نے اثاثے درست طور پر ظاہر نہیں کئے ہیں۔ اس طرح پولنگ اسٹیشنز نمبر97 سے139 تک اس حلقہ سے کامیاب وزیراعلیٰ پنجاب کے قبائلی علاقہ تمن بزدار میں قائم کئے گئے اور اس کے پولنگ ایجنٹوں کو علاقہ میں داخل ہی نہیں ہونے دیا گیا اس لئے ان پولنگ اسٹیشنزکے ووٹوں پر درج انگوٹھے کے نشانات نادرا سے چیک کرائے جائیں جبکہ فارم48 میں درست ظاہر نہیں کئے گئے ہیں جو خلاف قانون اقدامات کا ثبوت ہیں۔ اس طرح الیکشن سے ایک روز قبل ٹرائبل ایریا کے6 پولنگ اسٹیشنز کا سٹاف تبدیل کردیا گیا ہے جبکہ اس کے پولنگ ایجنٹس کو گنتی میں نہیں بیٹھنے دیا گیا اور فارم45 بھی نہیں دئیے گئے ہیں۔ اس لئے وزیراعلیٰ کو اس حلقہ سے بطور کامیاب امیدوار ایم پی اے نااہل قرار دیا جائے۔

ملتوی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -