شوکت بسرا کا سیاسی میدان میں فرنٹ فٹ پر آ کر کھیلنے کا فیصلہ

شوکت بسرا کا سیاسی میدان میں فرنٹ فٹ پر آ کر کھیلنے کا فیصلہ

  

ہارون آباد(نامہ نگار)شوکت بسرا کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے بعد حلقہ این اے 169اور پی پی 243میں تبدیلی کی فضا ہموار ہو گئی ہے اور تبدیلی کا سفر اس علاقہ میں بھر پور انداز سے اجاگر ہوگیا ہے چوہدری شوکت محمود بسراء نے الیکشن 2018میں آزاد امیدوار قومی اسمبلی کی حیثیت سے 52ہزار سے زائد ووٹ حاصل کر کے اپنی سیاسی حیثیت اور ووٹ بنک کا موثر اظہار کیا ہے چوہدری شوکت(بقیہ نمبر34صفحہ12پر )

محمود بسراء کو مستقبل قریب میں ممکنہ بلدیاتی ڈھانچے میں ضلع اور تحصیل کی سطح پر موثر اور اہم ذمہ داریاں ملنے کی باتیں بھی حلقہ میں کی جا رہی ہیں جبکہ بعض سیاسی مبصرین چوہدری شوکت محمود بسراء کی آئندہ قومی انتخابات میں بھی کلیدی رول کا امکان ظاہر کر رہے ہیں کہ اگر مڈٹرم الیکشن ہوتے ہیں تو چوہدری شوکت محمود بسراء اس حلقہ میں پی ٹی آئی کے لیے مضبو ط امیدوار ثابت ہو سکتے ہیں الیکشن 2018میں پی ٹی آئی کے حلقہ این اے 169اور پی پی 243میں امیدوار کھڑے نہیں کیے تھے اور مسلم لیگ (ضیاء) امیدواروں کی حمایت بحیثیت اتحادی کی تھی دوسری جانب تحریک انصاف ہارون آباد کے مقامی رہنماؤں و کارکنان راؤ شعیب احمد ،چوہدری معظم علی ،محمد عرفان چوہدری ،محمد عثمان واہلہ ،ندیم رامے نے چوہدری شوکت محمود بسراء کی تحریک انصاف میں شمولیت کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ دیر آئے درست آئے اورحلقہ کی سیاست میں گیم چینجر اقدام قرار دیا ہے اور اس اقدام سے حلقہ این اے 169ہارون آباد سمیت ضلع بہاولنگر کی موجودہ سیاسی صورتحال میں تحریک انصاف کی مضبوطی متحرک ہونے کا اظہار بھی قرار دیا ہے ۔ادھر شوکت بسرا نے پی ٹی آئی میں شمولت کے بعد سیاسی میدان میں اہم کردار ادا کرنے کافصلہ کیا ہے۔

شوکت بسرا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -