پرائیویٹ ہسپتالوں سے متعلق ازخودنوٹس کیس،سپریم کورٹ کا نجی ہسپتالوں کے آڈٹ کرانے کا حکم،22 دسمبر تک رپورٹ طلب

پرائیویٹ ہسپتالوں سے متعلق ازخودنوٹس کیس،سپریم کورٹ کا نجی ہسپتالوں کے آڈٹ ...
پرائیویٹ ہسپتالوں سے متعلق ازخودنوٹس کیس،سپریم کورٹ کا نجی ہسپتالوں کے آڈٹ کرانے کا حکم،22 دسمبر تک رپورٹ طلب

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے پرائیویٹ ہسپتالوں سے متعلق ازخودنوٹس میں پرائیویٹ ہسپتالوں کاآڈٹ کرانے کاحکم دیدیااور 22 دسمبرتک رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے پرائیویٹ ہسپتالوں سے متعلق ازخودنوٹس کی سماعت کی،پرائیویٹ ہسپتالوں کے ڈاکٹرزعدالت پیش ہوئے،عدالت نے کہا کہ ہیلتھ کیئرکمیشن مرتب کردہ رپورٹ پیش کرے،ہیلتھ کیئرکمیشن کی جانب سے ڈاکٹراجمل نے نجی ہسپتالوں سے متعلق رپورٹ پیش کی۔

عدالت نے استفسار کیا کہ کیاآپ نے وینٹی لیٹرسے متعلق معلومات ویب سائٹ پرڈال دیں؟ڈاکٹر اجمل نے بتایا کہ ہم نے تمام ہسپتالوں کے ڈاکٹرزسے مل کررپورٹ تیارکرلی ہے،عدالت نے استفسار کیا کہ نجی ہسپتال مریضوں سے ایک دن کاکتناچارج کرتے ہیں؟ڈاکٹر اجمل نے بتایا کہ نجی ہسپتال اے کلاس میں 32211 روپے تک چارج کرتے ہیں،عدالت نے کہا کہ پرائیویٹ ہسپتالوں نے پبلک سیکٹرکابراحال کیاہواہے ، اگر پرائیویٹ ہسپتال یہ نہیں کریں توکیسے چلیں؟۔

عدالت نے استفسار کیا کہ سناہے کچھ ہسپتالوں نے جنریٹرباہرسٹرک پررکھے ہوئے ہیں؟کسی ہسپتال کی بلڈنگ خلاف قانون بنی ہے تو گرا دیں، چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اگرکسی کوریٹ سے متعلق تحفظات ہیں تووہ درخواست دائرکرسکتاہے،عدالت کاپرائیویٹ ہسپتالوں کاآڈٹ کرانے کاحکم دیدیااور 22 دسمبرتک رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -