تمام مسالک اور مذاہب کے پیروکارہم آہنگی کو فروغ دیں، قبلہ ایاز

 تمام مسالک اور مذاہب کے پیروکارہم آہنگی کو فروغ دیں، قبلہ ایاز

  



ٓٓاسلام آباد(آ ئی این پی)اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر قبلہ ایاز نے کہا ہے کہ وطن عزیز کو جنونی انتہاپسندی اور دہشتگردی سے نجات دلانے کے لئے متفقہ قومی بیانیہ پیغام پاکستان عصر حاضر کے تقاضوں کے عین مطابق بہترین دستاویز اور ملک میں امن و استحکام کو فروغ دینے کا قابل تقلید لائحہ عمل ہے جسکی مدد سے ہم پاکستان میں امن و سلامتی پر مبنی مثالی فلاحی معاشرہ تشکیل دے کر قوم و ملک کو شاہراہ ترقی پر گامزن کر سکتے ہیں۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار پاک چین دوستی سنٹر میں امن کی آوازیں کے عنوان سے منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سیمینار میں مقررین نے معاشرے میں امن اور استحکام کے لئے انسداد دہشت گردی کے قومی بیانیہ پیغام پاکستان کے کردار کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ ایٹمی قوت کا حامل ملک ہونے کی وجہ سے پاکستان کیخلاف دشمن ممالک گہری سازشیں کر رہے ہیں اور پاکستان پر براہ راست جنگ مسلط کرنے کے بھیانک نتائج سے خوفزدہ یہ دشمن ممالک اور انکے خفیہ ادارے پاکستان کے مختلف طبقات کو ایک دوسرے سے لڑانے کے لئے جنونی انتہا پسندی کو پروان چڑھانے کی خاطر سرمایہ کاری کرتے آرہے ہیں اس لئے تمام محب وطن دانشوروں کا فرض ہے کہ وہ اپنے پاک وطن کے خلاف ہونے والی گھنانی سازشوں کا قلع قمع کرنے کے لئے رائے عامہ کو بیدار،منظم اور متحرک کرتے ہوئے جنونی انتہا پسندی کے سدباب کے لئے اپنا کردار ادا کریں۔ اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر قبلہ ایاز نے اپنے صدارتی خطاب میں کہا کہ پاکستانی معاشرے کو دہشت گردی اور جنونی انتہا پسندی سے نجات دلانے کے لئے ضروری ہے کہ تمام مسالک اور مذاہب کے پیروکاروں میں امن استحکام اور باہمی اتحاد و ہم آہنگی کو فروغ دیا جائے جس کے لئے لازم ہے کہ معاشرے کے تمام طبقات اور مذاہب سے تعلق رکھنے والے شہریوں کے مساوی حقوق کے اصولوں پر سختی سے عمل درآمد کرتے ہوئے بلا امتیاز و تفریق جامع عادلانہ معاشرہ تشکیل دے کر نوجوانوں اور خواتین کو فیصلہ سازی کے عمل میں شریک کیا جائے کیونکہ پائیدار امن و ہم آہنگی کے قیام و استحکام کے لئے ہمہ قسمی مذہبی، نسلی لسانی اور صنفی تعصبات،تشدد اور بدسلوکی کے عوامل کا مستقل طور پر سدباب کرنا موجودہ دور کا اہم ترین تقاضا ہے۔

 قبلہ ایاز

مزید : صفحہ آخر