سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کا جلاس،سٹارٹ اپز سہولت کیلئے کمپنیز ایکٹ میں ترامیم منظور

  سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کا جلاس،سٹارٹ اپز سہولت کیلئے کمپنیز ایکٹ ...

  



اسلام آباد (این این آئی)سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن پالیسی بورڈ کے اجلاس میں سٹارٹ اپز کی سہولت کیلئے کمپنیز ایکٹ میں ترامیم کی منظور ی دیدی۔اسلام آباد میں سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کے پالیسی بورڈ کا اجلاس، بورڈ کے چیئرمین خالد مرزا کی صدارت میں منعقد ہوا۔ اجلا س میں ملک میں سٹارٹ اپز کو سہولت اور کاروباری آسانیوں کی فراہمی کے پیش نظر کمپنیز ایکٹ میں مختلف ترامیم کی منظوری دی گئی۔ایس ای سی پی کے چیئرمین عامر خان نے بورڈ کو آگاہ کیا کہ بورڈ کی ہدایات کے مطابق انہوں نے لاء انفورسمنٹ ایجنسیوں میں تعینات ایس ای سی پی کے افسران کی واپسی کیلئے خط لکھ دیا ہے،امید ہے بورڈ کے آئندہ اجلاس سے قبل متعلقہ اداروں سے جواب موصول ہو جائیگا۔ پا لیسی بورڈ نے کمیشن کو ہدایت کی کہ تحقیقاتی ادارے کی جانب سے مختلف کیسوں میں ملوث کئے گئے ایس ای سی پی کے افسران کے حوالے سے فیکٹ فائنڈنگ کی جائے اورحقائق جانے جائیں کہ اصل معاملات کیا ہوئے اور اگر ان افسران نے کوئی غلط کام کیا ہے تو اس کی نوعیت کیا ہے۔ایس ای سی پی کی جانب سے ادارے کی سالانہ رپورٹ منظوری کیلئے پیش کی گئی۔ اس حوالے سے فیصلہ کیا گیا کہ بورڈ ارا کین سا لانہ رپورٹ کا جائزہ لیں گے اور بورڈ کے آئندہ اجلاس میں رپورٹ کی منظوری دی جائیگی۔فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے کی گئی درخواست پر غور کرتے ہوئے بورڈ نے کمیشن کو ہدایت کی کہ تمام رجسٹرڈ کمپنیوں کو ایک خط لکھ کر سالانہ ٹیکس ریٹرن باقاعدگی اور قانون کے مطابق جمع کروانے کی ہدایت کی جائے۔ پالیسی بورڈ نے اس بات پر دوباری تشویش کا اظہار کیا کہ ایس ای سی پی کے بورڈ پر حکومت کی جانب سے تعینات وفاقی سیکریٹری کی سطح کے سرکاری افسران بورڈ کے اجلاسوں میں خود شریک نہیں ہوتے بلکہ شرکت کیلئے اپنے نامزد افسران بھجوا دیے جاتے ہیں۔ بورڈ کے خیال میں وفاقی سیکرٹریز کے بجائے نامزد افسران کی شرکت سے بورڈ کی افادیت متاثر ہوتی ہے۔ اس سلسلے میں بورڈ نے فیصلہ کیا کہ وزارت خزانہ کو خط لکھ کر اپنے تحفظات سے آگاہ کیا جائے گا اور درخواست کی جائے گی متعلقہ اراکین کو بورڈ اجلاسوں میں شرکت کی ہدایت کی جائے۔پالیسی بورڈ نے مالی سال 2019 کیلئے کمیشن اور وفاقی حکومت کی جانب سے تعینات کمشنرز کی سالانہ کارکردگی کی رپورٹ کو بھی حتمی شکل دی۔پالیسی بورڈ نے ایس ای سی پی کی تجویز پر ملک میں سٹارٹ اپز کی پیزرائی اور نئے اور جدید کاروباروں کو فروغ دینے کیلئے کمپنیز ایکٹ میں ترامیم کی بھی منظوری دی۔ اس کیساتھ بورڈ نے ایکٹ کے تیسرے شیڈول میں ترمیم کی منظوری دیتے ہوئے لفظ ’سٹارٹ اپ‘ کی تعریف و تشریح کی بھی منظوری دی۔

مزید : صفحہ آخر


loading...