احتجاج، کمشنر کانوٹس، تعلیمی بورڈ کایوٹرن، آخری روز میٹرک داخلہ فارمز جمع

احتجاج، کمشنر کانوٹس، تعلیمی بورڈ کایوٹرن، آخری روز میٹرک داخلہ فارمز جمع

  



ملتان (سٹاف رپورٹر) کمشنر ملتان ڈویژن کی طرف سے سخت نوٹس لینے پر تعلیمی بورڈ ملتان نے آخری روز سرکاری و پرائیویٹ سکولوں کے میٹرک کے طلباو طالبات کے داخلہ فارمز بمشکل جمع کرلئے۔ ایک سکول مالک نے احتجاج کرتے ہوئے داخلہ فارمز رکھ کر کہا کہ ”آپ نے داخلہ فارمز وصول نہیں کرنے تو انہیں آگ لگا دیں“۔ بتایا گیا ہے کہ تعلیمی بورڈ ملتان نے میٹرک امتحانات2010کے (بقیہ نمبر10صفحہ12پر)

امیدوارایک ہزار سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں کے کوڈ بلاک کر دئیے اور طلبا وطالبات کے داخلہ فارم یہ کہہ کرروک لئے تھے کہ ان سکولوں نے 2010"11'12میں میٹرک کی اسناد کی مد میں فیسیں ادا کر نی ہیں۔ اسناد فیسوں کی عدم ادائیگی پر ان سکولوں کے موجو دہ طلبا وطالبات کے میٹرک امتحانات 2020کے لئے داخلے نہیں ہوں گے‘اس پر ساؤتھ پنجاب پرائیویٹ سکولز گرینڈ الائنس اور فیڈریشن آف رجسٹرڈ پرائیویٹ سکولز پنجاب کے شدید احتجاج پر معاملہ میڈیا میں آنے پر تعلیمی بورڈ نے کوڈ تو ڈی کو ڈ کر دئیے مگر داخلہ فارمز جمع کرنے سے انکار کر دیا جس پر صورتحال گھمبیر ہو گئی۔11دسمبر کو ساؤتھ پنجاب پرائیویٹ سکولز گرینڈ الائنس اور فیڈریشن آف رجسٹرڈ پرائیویٹ سکولز پنجاب کے وفد نے کمشنر ملتان ڈویژن شان الحق کے ساتھ ملاقات کی اور انہیں بتایا کہ2010"11'12میں میٹرک اسناد کی فیس لاگو ہی نہیں تھی‘ اس کے علاوہ اب 9سال بعد بورڈ حکام کو یاد آیا ہے کہ یہ فیسیں لینی ہیں اور موجو دہ بے قصور طلبا وطالبات کو کیو ں ناحق پریشان کیا جارہا ہے۔ اس پر کمشنر ملتان ڈویژن شان الحق نے کہا کہ طلباو طالبات کے داخلے کسی صورت میں نہیں روکے جاسکتے کیوں کہ یہ ان کے مستقبل کا معاملہ ہے‘ کمشنر شان الحق نے تعلیمی بورڈ ملتان کے سیکرٹری کے جی شاد کو فون کرکے مسئلہ حل کرنے اور طلبا وطالبات کے داخلہ فارمز فوری طور پر جمع کرنے کا حکم دیا مگر چیئرپرسن تعلیمی بورڈ ڈاکٹر شمیم اختر کی چھٹی کے باعث داخلہ فارمز جمع نہ ہو سکے‘ گزشتہ روز سنگل فیس کے ساتھ داخلہ فارمز جمع کرنے کی آخری تاریخ 13دسمبر تھی‘ اقبال ہائی سکول بدھلہ سنت کے پرنسپل ارشد محمود تعلیمی بورڈ ملتان پہنچے تو متعلقہ عملے نے داخلہ فارمز جمع کرنے سے انکار کر دیا جس پر پرنسپل ارشد محمود نے شدید احتجاج کیا اور شور مچا دیا اور کہنے لگے کہ ”یہ داخلہ فارمز آپ کے پاس پڑے ہیں‘ اگر جمع نہیں کرنے تو انہیں آگ لگادیں“صورتحال کا علم ہونے پر چیئرپرسن ڈاکٹر شمیم اختر اور کنٹرولر امتحانات ڈاکٹر ظفر اقبال طاہرمتعلقہ برانچ پہنچے اور عملے سے کہا کہ”ان کے داخلہ فارمز جمع کرلیں“ اس پر عملے نے کہا کہ صرف ان کے ہی کیوں‘ دیگر سکولوں کے بھی جمع کئے جائیں“ مگر عملے نے پرنسپل ارشد محمود کے طلبہ کے داخلہ فارمز جمع کرلئے۔ دوسری جانب داخلہ فارمز آخری تاریخ پر بھی جمع نہ ہونے پرکمشنر ملتان ڈویژن نے سخت نوٹس لیا تو تعلیمی بورڈ ملتان نے سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں کے طلبا وطالبات کے داخلہ فارمز جمع کرلئے۔ اس حوالے سے تعلیمی بورڈ حکام کا کہنا ہے کہ تمام سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں کے طلباوطالبات کے داخلہ فارکز جمع کرلئے گئے ہیں تمام اقدامات میرٹ اور پالیسی کے مطابق کئے جارہے ہیں‘ سکولوں سے اسناد فیس وصولی کے لئے اقدامات کئے گئے ہیں‘ہمارا مقصد کسی کو تنگ کرنا نہیں ہے۔مختلف سکولوں نے اسناد فیسیں جمع کرا دی ہیں۔پنجاب ٹیچرز یونین ایگزیکٹو گروپ نے جوابی وار کرتے ہوئے چیئر پرسن تعلیمی بورڈ شمیم اختر کی تعلیم کش پالیسیوں کے خلاف سکولز میں امتحانی سنٹرز بھی نہ قائم ہونے دینے کا اعلان کردیا ہے جبکہ بورڈ امتحانات کے دوران اساتذہ کی ڈیوٹیوں سے بھی انکار کر دیا ہے۔ اس سلسلے میں گذشتہ روزپنجاب ٹیچرز یونین ایگزیکٹو گروپ کا اہم اجلاس منعقد کیا گیا جس کی صدارت سینئر اساتذہ رہنما عابد فرید بزدار نے کی جبکہ ریاض احمد آصف، محمد رمضان انجم، رانا الطاف حسین، محمد شاہد رضوی، اجمل خان، رانا نئیر اقبال، مہر محسن رضا، آغا ممتاز، محمد ارشد طاہر، مہر اسحاق ہانسلہ، رانا دلشاد علی، محمد اشفاق انصاری، محمد رفیق کاظمی،مہر محمد اقبال، محمد اصغر اٹھنگل، ملک محمد ساجد دھرالہ ودیگر بھی موجود تھے۔ اجلاس میں متفقہ قراردادیں بھی منظور کی گئیں کہ سابقہ برسوں میں فیل ہونے والے طلبہ و طالبات کی فیسیں تعلیمی بورڈ ملتان فی الفور سکولز سربراہان کو ادا کرے، تعلیمی بورڈ ملتان اپنی کوتاہیاں اور خامیاں سکولوں کے کھاتے میں نہ ڈالے، امتحانی سنٹرز کو تعلیمی بورڈ فی الفور فرنیچرز کی فراہمی کو یقینی بنائے، تعلیمی بورڈ پراسیسنگ فیس متعلقہ سکولوں کو واپس کرے‘ اسی طرح تعلیمی بورڈ ملتان اپنے فرائض سکولوں پر مسلط نہ کرے کیونکہ اساتذہ کا تدریسی عمل متاثر ہو تا ہے۔ اجلاس میں اس بات کا بھی فیصلہ کیا گیا کہ اگر چیئر پرسن تعلیمی بورڈ نے اپنا رویہ درست نہ کیا اور طلبہ و طالبات کی تعلیم میں رکاوٹ ڈالی تو شدید ردعمل کاا ظہار کیا جائے گاکیونکہ اساتذہ تعلیم کے شعبہ کی بہتری اور نونہالان کے بہترمستقبل کو کسی صورت داؤ پر نہیں لگانے دیں گے۔ اس سلسلے میں پنجاب ٹیچرز یونین ایگزیکٹو گروپ کا آئندہ اجلاس کل بروز سوموار 16دسمبر کو ہو گا جس میں ضلع و شہر کے تعلیمی اداروں کے سربراہان و اساتذہ رہنماشرکت کریں گے اور آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔

جمع، فارمز

مزید : ملتان صفحہ آخر