تیل وگیس کمپنیوں کے ظلم وستم کے خلاف کوہاٹ ڈویژن کی سطح پر تحریک زورپکڑ نے لگی

تیل وگیس کمپنیوں کے ظلم وستم کے خلاف کوہاٹ ڈویژن کی سطح پر تحریک زورپکڑ نے ...

  



کرک (نمائندہ خصوصی)تیل و گیس کمپنیوں کے ظلم و ستم کے خلاف کوہاٹ ڈویژن کی سطح پر شروع ہونے والی تحریک زور پکڑنے لگی، قومی لویہ جرگہ کی کرک کیلئے نامزد کمیٹی کا مشاورتی اجلاس جلسے میں تبدیل، مختلف سیاسی جماعتوں کے عہد یداروں سمیت سماجی تنظیموں کے مشران اور چیدہ سیاست دانوں نے 5جنوری کو تیل و گیس سپلائی بند کرنے سمیت احتجاجی تحریک میں بھرپور شرکت کا فیصلہ کرلیا، کرک کے کونے کونے میں عوامی رابطہ مہم کیلئے کمیٹیاں تشکیل دیدی گئیں۔اجلاس جمعیت علما اسلام (ف) کے ایم پی اے و قومی لویہ جرگہ کے چیئرمین میاں نثار گل کی سربراہی میں کا کا خیل ہاس کرک سٹی میں منعقد ہوا جس میں ایم پی اے ملک ظفر اعظم، سابق ایم این ایز شاہ عبد العزیز، شمس الرحمان خٹک، مسلم لیگ (ن)کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری رحمت سلام خٹک، جمعیت علما اسلام (ف) کے ضلعی امیرمولانا فاروق، مسلم لیگ (ن) کے ضلعی صدر میاں اخلاق یونس، خٹک اتحاد کے صدر مولانا میر زاقیم خٹک، کرک زندہ باد تحریک کے چیئرمین و سینئر صحافی سعد اللہ خٹک، روشان ایڈووکیٹ، نصیر خان ایڈووکیٹ، سابق تحصیل ناظم حاجی عبد الرحمان، سابق ناظمین خوشحال محمد فرحت، میر شلی خان، بہادر استاد، صاحب گل چیئرمین اور خٹک اتحاد کے دیگر سرکردہ عہد یداروں سمیت مختلف سماجی تنظیموں کے مشران و مختلف پارٹیوں کے ورکرز نے کثیر تعداد میں شرکت کی تقریبا تین گھنٹے تک جاری رہنے والے اس اجلاس میں قومی لویہ جرگہ کے مشران سمیت دیگر عمائدین اور سرکردہ شخصیات نے تیل و گیس کمپنیوں کی ہٹ دھرمیوں سے عوام کو درپیش مسائل پر تفصیلی تجاویز پیش کرتے ہوئے احتجاجی تحریک کی بھرپور انداز میں تائید کی تجاویز کی روشنی میں قومی لویہ جرگہ کے چیئرمین و ایم پی اے میاں نثار نے مشترکہ اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ کوہاٹ ڈویژن کی سطح پر شروع ہونے والی اس تحریک کو ہر حال میں کامیاب بنانے اور پانچ جنوری کو طے شدہ شیڈول کے مطابق تیل و گیس کی دیگر علاقوں تک سپلائی احتجاجا بند کرانے کیلئے کرک سے ہزاروں افراد پر مشتمل قافلہ تیار کرینگے جس کیلئے عوامی رابطہ مہم کے فوری آغاز کا بھی فیصلہ ہوا اور ضلع کرک کی تینوں تحصیلوں کیلئے مشران پر مشتمل کمیٹیاں بھی تشکیل دیدی گئیں انہوں نے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کوہاٹ ڈویژن میں کام کرنیوالی تیل و گیس کمپنیوں کے ظلم و ستم اور عوامی استحصال کیخلاف اسمبلی فلور سمیت ہر فورم پر آواز اٹھائی مگر بے لگام کمپنیاں ٹھس سے مس نہیں ہو رہی ہیں ان کا کہنا تھا کہ کوہاٹ ڈویژن کی سطح پر قائم قومی لویہ جرگہ کی لیڈنگ اگر چہ جمعیت علما اسلام (ف) کر رہی ہے لیکن کسی بھی سیاسی جماعت کے کارکن سمیت سماجی تنظیموں کے رضا کار ہماری اس جدوجہد کا حصہ بن سکتے ہیں اور کہاکہ ہم سیاسی مقاصد کیلئے نہیں بلکہ عوامی مقاصد کے حصول کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ تیل و گیس سے عوامی حقوق کے حصول و دیگر مسائل کے حل کیلئے ہم نے پندرہ نکاتی ایجنڈا پیش کر دیا ہے اور ہم نے اس سلسلے میں دوٹوک موقف اپنانے کے ساتھ ساتھ حکومت سے مذاکرات کیلئے بھی دروازے کھلے رکھے ہیں کیونکہ ہم قانون ہر گز ہاتھ میں لینا نہیں چاہتے، ہر سمت سے مجبور ہو کر ہم نے فیصلہ کن احتجاجی تحریک شروع کر رکھی ہے اور ہم اس پر عمل درآمد یقینی بنا کر ہی دم لینگے انہوں نے مشران کی تجاویز کی روشنی میں کروڈ آئل چوری کیس اور تیل و گیس کمپنیوں سمیت یورنیم آفزدوگی سے تباہ حال ماحول اور اس سے پیدا ہونے والی خطرناک بیماریوں کے اہم ایشوز کو بھی ایجنڈا میں شامل کرنے کا اعلان کیا اور کہا کہ پانچ جنوری کا تاریخی احتجاج کرک کے عوام کیلئے کسی بڑے چیلنج سے کم نہیں مگر ہمیں گھروں سے نکل کر ہر حال میں اسے کامیاب بنانا ہوگا اور کہا کہ کوہاٹ و ہنگو سے نکلنے والے قافلوں سے کہیں زیادہ بڑا قافلہ لیکر احتجاج میں شریک ہونگے جس کیلئے باقی ماندہ ایام میں ضلع کرک کے کونے کونے میں بھرپور عوامی رابطہ مہم چلا ئی جائیگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...