مودی کی متعصب پالیسیوں کے باعث ہندو ستان میں مسلمانوں پر زمین تنگ ہو گئی:حافظ عبدالغفارروپڑی

مودی کی متعصب پالیسیوں کے باعث ہندو ستان میں مسلمانوں پر زمین تنگ ہو ...
 مودی کی متعصب پالیسیوں کے باعث ہندو ستان میں مسلمانوں پر زمین تنگ ہو گئی:حافظ عبدالغفارروپڑی

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)جماعت اہلحدیث  پاکستان کے امیر حافظ عبدالغفارروپڑی نے بھارتی لوک سبھا میں مسلمانوں سے امتیازی سلوک پر مبنی بھارتی شہریت بل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ یہ اقدام انسانی حقوق کے عالمی منشور اور بین الاقوامی معاہدات کی کھلی خلاف ورزی ہے اس متنازع بل سے پوری دنیا کے مسلمانوں دل کو ٹھس پہنچی ہے، مودی کی متعصب پالیسی باعث ہندو ستان میں مسلمانوں پر زمین تنگ ہو گئی ہے۔

جامع القدس چوک دالگراں میں علماء کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئےحافظ عبدالغفارروپڑی کا  کہنا تھا کہلوک سبھا سے بل پاس ہو نے سے یہ ثابت ہو گیا ہے کہ بھارت ایک انتہاپسندملک ہے۔اُنہوں نےکہاکہ پاکستان کےحکمران ریاستِ مدینہ کی تشکیل اوراِس کوعملی جامہ پہنانےکےلئےفوری اِسلامی نظام کے نفاذ کو یقینی بنائیں،مغربی ممالک ماضی میں مسلمانوں کےجذبات کےساتھ کھیلنے والی سرگرمیوں کی روک تھام کیلئےعملی اقدامات اٹھاتے تو آج ناروے میں ایسی اسلام دشمن تنظیمیں اوران کے کارندے دنیا میں بسنے والے دو ارب مسلمانوں کی دل آزاری کی جسارت نہ کرسکتے ۔اُنہوں نے اللہ رب العزت کی ذات مقدس کے ساتھ ساتھ دوارب مسلمانوں کے نظریات اورجذبات کو بھی چیلنج کیا پھر مسلمانوں پر انتہا پسندی اورجذباتیت کا لیبل بھی اسلاموفوبیاکی بنا پر چسپاں کیا  جاتا ہے۔حافظ عبدالغفارروپڑی نےکہاکہپی آئی سی سانحہ کی غیرجانبدارانہ تحقیقات کرائی جائیں اوراصل حقیقت چھپانے کی بجائےحقائق قوم کےسامنےلائےجائیں۔اس موقع پرحافظ عبدالوھاب روپڑی اور مولانا شکیل الرحمن ناصر سمیت دیگر بھی موجود تھے ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...