اگر کسی کو کورونا ہوجائے تو اس کے شوہر یا بیوی کو منتقل ہونے کا خطرہ کتنا ہوتا ہے؟ تازہ تحقیق میں سائنسدانوں کا انتہائی حیران کن انکشاف

اگر کسی کو کورونا ہوجائے تو اس کے شوہر یا بیوی کو منتقل ہونے کا خطرہ کتنا ہوتا ...
اگر کسی کو کورونا ہوجائے تو اس کے شوہر یا بیوی کو منتقل ہونے کا خطرہ کتنا ہوتا ہے؟ تازہ تحقیق میں سائنسدانوں کا انتہائی حیران کن انکشاف

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) اگر احتیاط نہ کی جائے تو کورونا وائرس سے متاثرہ ایک شخص درجنوں دیگر لوگوں کو بھی اس کا مریض بنا سکتا ہے تاہم اب فیملی کے افراد اور شریک حیات کے متعلق نئی تحقیق میں اس حوالے سے حیران کن انکشاف کر دیا گیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ فیملی کے کسی فرد سے دیگر افراد کو کورونا وائرس منتقل ہونے کا خطرہ صرف 17فیصد ہوتا ہے۔ اس کے برعکس شریک حیات کی طرف سے دوسرے پارٹنر کو وائرس منتقل ہونے کا خطرہ زیادہ (37.8فیصد)ہوتا ہے۔

اس تحقیق میں یونیورسٹی آف فلوریڈا کے سائنسدانوں نے کورونا وائرس کے 77ہزارمریضوں کے ڈیٹا کا تجزیہ کیا اور نتائج مرتب کیے۔گھر میں ایسے مریضوں نے 18فیصد فیملی ممبرز کو متاثر کیا جن میں وباءکی علامات واضح ہو چکی تھی۔ ان کے برعکس ایسے متاثرہ لوگ جن میں کوئی علامت ظاہر نہیں ہوئی تھی اور وہ خود بھی نہیںجانتے تھے کہ کہ انہیں وائرس لاحق ہو چکا ہے ان سے گھر کے دیگر افراد کو صرف 0.7فیصد وائرس لاحق ہوا۔

رپورٹ کے مطابق تحقیقاتی ٹیم کا کہنا تھا کہ ”کورونا وائرس کے مشتبہ یا مصدقہ کیسز کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ گھر میں خود کو تنہاءکر لیں۔ ایسی صورت میں مریض سمیت گھر کے دیگر افراد کو گھر کے اندر بھی فیس ماسک پہننا چاہیے اور دیگر احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئیں۔“ 

مزید :

تعلیم و صحت -کورونا وائرس -