ملک دو لخت کیوں اور کس کی وجہ سے ہوا ؟سینیٹر سراج الحق نے"سقوط پاکستان"پر سب کو تنبیہہ کردی

ملک دو لخت کیوں اور کس کی وجہ سے ہوا ؟سینیٹر سراج الحق نے"سقوط پاکستان"پر سب ...
ملک دو لخت کیوں اور کس کی وجہ سے ہوا ؟سینیٹر سراج الحق نے

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق نےکہاہے کہ آستین کے سانپوں کے ساتھ ساتھ استعماری قوتوں کی سازشوں نے 16 دسمبر 1971 ءکو پاکستان کو دو لخت کردیا،اب بھی ملک کو عدم استحکام سے دوچار کرنے اور اس کی نظریاتی شناخت کو ختم کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں، وسائل کی منصفانہ تقسیم اور اسلامی نظام حکومت ہی پاکستان کی سلامتی کا ضامن ہے،حکومت سازی کے لیے شفاف جمہوری نظام قائم کرنا ہوگا ۔

یوم سقوط ڈھاکہ کےموقع پر اپنے ایک بیان اورکراچی میں تنظیمی دورہ کےموقع پرکارکنان سےگفتگو کرتےہوئےسینیٹرسراج الحق نےکہا کہ سیاستدانوں،سول اور ملٹری بیوروکریسی کی نااہلی کی وجہ سےپاکستان کےدو ٹکڑے ہو گئے,1958 ءسے لے کر 1970 ءکے مارشل لا ز نے ملک کو شدید عدم استحکام کا شکار کیا جس کی وجہ سے عالمی استعمار،جس نےپاکستان کےوجود کو اس کےقیام سےلےکراب تک تسلیم نہیں کیا تھا، کو موقع مل گیا کہ اپنے ناپاک منصوبوں کو حقیقت کاروپ دے,اس کےساتھ ساتھ آستین کے سانپوں نےبھی استعمار کاساتھ دیا,وسائل کی غیرمنصفانہ تقسیم اور70 ءکے الیکشن کےنتائج کوتسلیم نہ کرنابھی سانحہ مشرقی پاکستان کاباعث بنا,حکمرا ن طبقہ نے ذاتی مفادات کو قومی مفادات پر ترجیح دی اور نظریہ پاکستان کے ساتھ غداری کی ۔

امیر جماعت اسلامی نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ اقتدار کے ایوانوں پر قابض اشرافیہ نے سانحہ مشرقی پاکستان کے بعد بھی اپنی ڈگر نہیں بدلی اور ملک کے استحکام اور ترقی کے لیے کوئی مثبت قدم نہیں اٹھایا,وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم ، غربت ، بے روزگاری اب بھی عوام میں احساس محرومی کو فروغ دے رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ افراد اور خاندانوں کی بجائے ملک میں قانون کی حکمرانی قائم کرناہوگی ,گزشتہ 73 برسوں میں ملک ہر طر ح کے طرز حکمرانی کے تجربات کیے گئے لیکن عوام کے مسائل جوں کے توں رہے,اب اسلامی نظام کا نفاذ کرنا ہو گا جس کی بنیاد پر کروڑوں مسلمانوں نے الگ ملک کے لیے جدوجہد کی تھی ۔ انہوں نے کہاکہ دھونس و دھاندلی کا وقت گزر چکاہے،جمہور کے فیصلوں کو تسلیم کیا جائے اور عوام کے اس مطالبہ پر سیاسی نظام کی تشکیل کی جائے جس کی بنیادپر انگریزوں اور ہندوؤں سے آزادی حاصل کی تھی۔

سینیٹر سرا ج الحق نے یوم سقوط ڈھاکہ کے موقع پر خصوصی طور پر جماعت اسلامی بنگلہ دیش کی قربانیوں کا ذکر کیا اور ان ہزاروں کارکنان کو خراج تحسین پیش کیا جنہوں نے نظریہ پاکستان کی محبت میں اپنی جانوں کے نذرانے پیش کیے،پروفیسر غلام اعظم ؒ ، مطیع الرحمن نظامی ؒ اور دیگر شہدا کی قربانیوں کو بھی فراموش نہیں کیا جاسکتا۔

مزید :

قومی -