عراق، موصل کو آزاد کرانے کیلئے فیصلہ کن معرکے کی تیاری شروع

عراق، موصل کو آزاد کرانے کیلئے فیصلہ کن معرکے کی تیاری شروع

  

بغداد(آئی این پی )عراقی فوج نے شمالی شہر موصل کو داعش تنظیم کے قبضے سے آزاد کرانے کے لیے فیصلہ کن معرکے کی تیاری شروع کر دی،سیکورٹی فورسز نے متعدد سمتوں سے نینویٰ صوبے کا گھیراؤ کرلیا ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق عراقی فوج نے شمالی شہر موصل کو داعش تنظیم کے قبضے سے آزاد کرانے کے لیے فیصلہ کن معرکے کی تیاری شروع کر دی ہے ۔عراقی حکومت نے وعدہ کیا تھا کہ آپریشن رواں سال کیا جائے گا۔شمالی عراق میں اس معرکے کی تیاری کے لیے جمع ہونے والی فورسز نے متعدد سمتوں سے نینویٰ صوبے کا گھیراؤ کرلیا ہے۔ اس حکمت عملی کا مقصد داعش تنظیم کو شکنجے میں کسنا نظر آتا ہے۔اس دوران نینویٰ آپریشنز کے کمانڈر نے آپریشن کو کامیاب بنانے اور فوجیوں کا مورال بلند کرنے کے لیے علاقے کا گشت اور ان سے ملاقاتیں کیں۔ فوجی ذرائع نے اس حوالے سے عراقی فورسز کے کمانڈ آپریشن روم اور اتحادی افواج کے درمیان اعلیٰ سطح کی کوآرڈینیشن کی تصدیق کی۔ خیال کیا جا رہا ہے کہ اتحادی افواج فضائی معاونت کے ذریعے آپریشن میں شریک ہوں گی۔اس کے علاوہ کرد بیشمرگہ فورسز کا بھی تعاون حاصل کیا جارہا ہے۔ اگرچہ اس حوالے سے بہت سی سیاسی پیچیدگیاں موجود ہیں تاہم بیشمرگہ فورسز لڑائی میں سرکاری فوج کے شانہ بشانہ ہوں گی۔ واضح رہے کہ داعش تنظیم کی دہشت گردی کی وجہ سے کردستان میں شدید اندیشوں کا راج ہے کیوں کہ داعش عربوں اور کردوں میں کوئی فرق نہیں کرتی۔اس معرکے میں میڈیا کی اہمیت کو جانتے ہوئے نینویٰ صوبے کو آزاد کرانے سے متعلق آپریشنز کمانڈر نے بتایا کہ جنگی کوریج میں مہارت رکھنے والے میڈیا کے افراد کو زمینی پیش رفت کی حقیقی تصویر پیش کرنے کا موقع دیا جائے گا تاکہ افواہوں اور غلط خبروں سے دور رہا جا سکے۔موصل آپریشن کچھ عرصہ قبل رمادی میں کیے جانے والے کامیاب آپریشن کی بنیاد پر شروع کیا جا رہا ہے۔ عراقی افواج نے داعش کے ساتھ خونریز لڑائی کے بعد رمادی شہر کا کنٹرول مکمل طور پر واپس لے لیا تھا۔

مزید :

عالمی منظر -