گجرات سے 11لاکھ سال پرانی جوگالی کرنیوالے جانور کی کھوپڑی دریافت

گجرات سے 11لاکھ سال پرانی جوگالی کرنیوالے جانور کی کھوپڑی دریافت

  

لاہور( اپنے نامہ نگار سے ) پنجاب یونیورسٹی شعبہ زوالوجی کے سائنسدانوں پر مشتمل تحقیقاتی ٹیم نے پنجن شیرشہانہ ، ضلع گجرات سے 11لاکھ سال پرانی جوگالی کرنے والے جانور کی کھوپڑی دریافت کر لی۔ تحقیقاتی ٹیم شعبہ زوالوجی کے چئیرمین پروفیسر ڈاکٹر جاوید اقبال قاضی کی سفارش پر، پروفیسر ڈاکٹر محمد اختر، اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر محمد اکبر خاں، ڈاکٹر عبدالماجد خاں، ڈاکٹر عبدالغفار (کامسیٹ یونیورسٹی) پی ایچ ڈی اور ریسرچ سکالر سید غیور عباس، پی ایچ ڈی سکالر محمد عاصم، محمد خلیل نواز، خالد محمود، شبینہ گل، محمد امین اور ایم فل ایم ایس سی طلباء پر مشتمل تھی۔ دریافت ہونے والی کھوپڑی کا تعلق نیل گائے کے خاندان Reduncinaeسے بتایا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ پنجن شیر شہانہ کے نواحی گاؤں راجو کی پبی سے تقریبا 8انچ موٹا ہاتھی دانت بھی بازیافت کیا گیا۔ یہ ہاتھی دانت ہاتھی خاندان کی نا پیدنسل سٹیگوڈان سے تعلق رکھتا ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد اختر نے بتایا کہ یہ فوسلز جانوروں کی درجہ بندی اور ارتقاء کے سمجھنے میں کافی مدد گار ثابت ہوں گے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -