جیالے کی ہلاکت،کوٹلی میں کشیدگی ،پیپلز پارٹی کا احتجاج ،آج یوم سیاہ کا اعلان،وزیراعظم آزاد کشمیر استعفادیں :مسلم لیگ ن

جیالے کی ہلاکت،کوٹلی میں کشیدگی ،پیپلز پارٹی کا احتجاج ،آج یوم سیاہ کا ...

  

کوٹلی (مانیٹرنگ ڈیسک، اے این این) کوٹلی میں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نون کے کارکنوں میں تصادم کے دوران پی پی پی کارکن کی ہلاکت کے بعد سیاسی کشیدگی عروج پر پہنچ گئی، کاروبار بند رہے اور گرفتاریاں جاری رہیں، وزیر اعظم آزاد کشمیر نے آج یوم سیاہ منانے کا اعلان کر دیا ہے۔ پیپلز پارٹی نے احتجاج کرتے ہوئے نکیال کوٹلی روڈ بند کر دی۔شہر میں کاروباری مراکز، دکانیں بند ہیں جبکہ پولیس اور فوج تعینات ہے۔وزیر اعظم آزاد کشمیر چودھری عبد المجید نے آج وادی بھر میں یوم سیاہ منانے کا اعلان کیا ہے۔ اس موقع پر احتجاجی ریلیاں بھی نکالی جائیں گی۔ ادھر کارکن کی ہلاکت کیخلاف پیپلز پارٹی کے کارکنوں نے نکیال میں احتجاج کرتے ہوئے کوٹلی روڈ کو بلاک کر دیا۔مظاہرین نے اس موقع پر ٹائر جلائے اور نعرے بازی کی۔ دوسری طرف اے این این کے مطابق وزیراعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجیدنے کہاہے کہ آزادکشمیرمیں وفاقی وزراء کی بے جامداخلت ،ن لیگ کے کارکنوں کوغنڈہ گردی پراکسانے اور پیپلزپارٹی کے جیالے کے قتل کے خلاف آج آزادکشمیربھرمیںیوم سیاہ منائینگے،مسلم لیگ ن اقتدارکے نشے میں بدمست ہوکرآزادکشمیرکی فضاکوخراب کررہی ہے یہاں لاٹھی اورگولی کی سیاست نہیں چلنے دینگے پی پی پی جیالے چوہدری منشی کے قاتلوں کوکیفرکردار تک پہنچائینگے۔ ہم نے راستہ روکنے کی سیاست نہیں کی ۔میرے مخالفین آکرمیرے حلقہ کے اندر سیا ست کریں نوازشریف کوبھی دعوت دیتاہوں کہ انہوں نے پہلے بھی میرے حلقہ میں جلسہ کیاتھاآج بھی کریں خیرمقدم کر و ں گا۔ کشمیر ا یشو پر ہمیں اعتماد میں نہیں لیا جا ر ہا ، وفاقی وزیر برجیس طاہرطوطاہے اوراس طوطے کی کسی بات کاجواب دینامیری توہین ہے ،پاکستان میں بزنس مینوں کی حکومت ہے اوربزنس مینوں کاکوئی ملک نہیں ہوتاکشمیرکسی کے باپ کانہیں۔تقسیم کشمیرکسی صورت قبول نہیں کرینگے،کشمیرکے مقدر کا فیصلہ کشمیری عوام کریں گے چیف ایگزیکٹوکے ہوتے ہوئے کوئی بیوروکریٹ جوڈیشل کمیشن نہیں بناسکتا۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ،اے این این) وزیر اعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر آصف کرمانی نے نکیال میں پی پی پی اورمسلم لیگ (ن) کے کارکنوں میں تصادم کا ذمہ دار آزاد کشمیر کے وزیر اعظم چوہدری عبدالمجید کو قرار دیتے ہوئے، ان کے استعفے کا مطالبہ کردیا،وزیر اعظم آزاد کشمیر عوام کے جان و مال کے تحفظ میں ناکام ہو چکے ، معاملے کی تحقیقات کے بجائے (ن)لیگ پر ملبہ ڈالنا چاہتے ہیں، آصف زرداری پارٹی کے کسی دانا آدمی کو آزاد کشمیر بھیجیں اور واقعے کی تحقیقات کرائیں ،آزاد کشمیر میں لیگی کارکنوں کے گھروں پر چھاپوں کی مذمت کرتے ہیں،ہمارے کارکنوں پر حملے کی ایف آئی آر درج نہیں کی جا رہی۔اتوارکو اسلام آباد میں نیوز کانفرنس میں ڈاکٹر آصف کرمانی نے کہا کہ آزادکشمیرمیں نا اہل اور بد عنوان وزیراعظم کے کہنے پرہمارے کارکنوں کو گرفتار کیا جا رہا ہے۔ نکیال میں پیپلز پارٹی یوتھ ریلی کے شرکا ء نے وزیر اعظم آزاد کشمیر کی شہ اور ہدایات پر مسلم لیگ ن سیتعلق رکھنے والے کاروباری حضرات پر حملہ کیا ۔ تصادم کے وقت وہ وہاں موجود تھے اور صورت حال کو شہ دے رہے تھے، مسلم لیگ ن کے کارکنوں نے اپنا دفاع کیا جس کے نتیجے میں تصادم ہوا، آزاد کشمیر پولیس خاموش تماشائی بنی رہی، پولیس نے نہ صرف حملہ آوروں کی حوصلہ افزائی کی بلکہ انکی سہولت کار بھی بنی۔ آصف کرمانی نے کہا کہ وزیر اعظم آزا د کشمیر کے احکامات پر اے جے کے پولیس آزاد کشمیر میں مسلم لیگ ن کے کارکنوں اور ووٹروں کے گھروں میں گھس کر گرفتاریاں کر رہی ہے۔اس گھناونے جرم میں وزیر اعظم آزاد کشمیر کاکر کردار ہے، انہوں نے خوف اور گھبراہٹ میں بیانات دینے شروع کر دیئے ہیں۔ وہ مجرم ہے ، اس نے گھناونے جرم کا ارتکاب کیا ہے، وہ واقعے کی تحقیقات نہیں چاہتے اور اس واقعے کو زبردستی ہمارے گلے میں ڈال رہے ہیں،چوہدری عبدالمجید آصف علی زرداری سے مسلسل جھوٹ بول رہے ہیں، آصف زرداری پارٹی کے کسی دانا آدمی کو آزاد کشمیر بھیجیں اور واقعے کی تحقیقات کرائیں۔

مزید :

صفحہ اول -