پاکستان کو ایف 16کی فراہمی ،امریکہ نے بھارتی اعتراض مسترد کر دیا

پاکستان کو ایف 16کی فراہمی ،امریکہ نے بھارتی اعتراض مسترد کر دیا

  

واشنگٹن،نئی دہلی (این این آئی،اے این این ) امریکہ نے پاکستان کو ایف 16طیاروں کی فروخت پر بھارتی اعتراض کو مسترد کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان کو طیاروں کی فروخت ضروری تھی۔ طیارے دہشت گردوں کے خلاف معاون ثابت ہونگے بھارتی واویلابلا جواز ہے ۔ صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان جان کربی نے کہا پاکستان کے قبائلی علاقوں میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کیلئے لڑاکا طیارے لازمی ہیں ۔آپریشن ضرب عضب کے باعث افغانستان میں بھی عسکریت پسندی میں کمی آئی ہے۔ پاکستان میں جاری آپریشن کے بعد افغانستان سمیت خطے میں امن و استحکام بحال ہوگا۔دوسری طرف بھارت میں امریکہ کے سفیر رچرڈ ورما نے پاکستان کو ایف 16 لڑاکا طیاروں کی فروخت کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایف 16کی فراہمی پاکستان کے ساتھ فوجی تعاون کا حصہ ہے۔ بھارتی ٹی وی کو دئیے گئے انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ گزشتہ کئی برسوں سے پاکستان کو سویلین اور فوجی آلات فراہم کیے گئے ہیں اور ایف 16 لڑاکا طیاروں کی فراہمی کا حالیہ فیصلہ ا سی سلسلے کی ایک کڑی ہے تاہم انہوں نے بھارت کی خوشنودی کیلئے پاکستان پر الزام تراشی بھی کی اور کہا کہ یہ ایک حقیقت ہے کہ پاکستان میں دہشت گرد گروپ سرگرم ہیں اور پاکستان کو اپنی سرزمین پر سرگرم ان دہشت گرد گروپوں کیخلاف کارروائی کرنے کی مزیدضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف اقدامات کیے تاہم اسے دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانے ختم کرنے کیلئے مزید اقدامات کرنا ہونگے۔

اسلام آباد (آئی این پی) ترجمان پاکستانی دفتر خارجہ نے پاکستان کے ایف سولہ طیاروں کی خریداری پر بھارتی ردعمل کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ سے طیاروں کی خریداری پر بھارت کا رویہ حیران کن ہے۔ انسداد دہشت گردی کیلئے پاکستان امریکہ میں قریبی تعاون ہے۔ اتوار کو ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت اسلحہ خریدنے والا خود ایک بڑا ملک ہے امریکہ سے طیاروں کی خریداری پر بھارت کا رویہ حیران کن ہے انہوں نے کہا کہ انسداد دہشت گردی کے لئے پاکستان اور امریکہ میں قریبی تعاون ہے امریکی ترجمان کہہ چکے ہیں کہ ایف سولہ طیاروں کی فراہمی اہداف کے حصول میں مدد دے گی۔

مزید :

صفحہ اول -