پنجاب ،پاکستان میں ونڈ انرجی کے سب سے بڑے پارک کے قیام کی راہ پر گامزن

پنجاب ،پاکستان میں ونڈ انرجی کے سب سے بڑے پارک کے قیام کی راہ پر گامزن

  

پاکستان میں ہوا سے توانائی کے سب سے بڑے منصوبے پرحکومت پنجاب نے کام شروع کر دیاہے ۔جس کے لیے حکومت پنجاب نے ڈنمارک کی ونڈ انرجی کی مشہور کمپنی ویسٹاس ونڈ سسٹمز کو 250 میگا واٹ کے چار پاور پلانٹ قائم کرنے کے لیے اظہار دلچسپی کا خط جاری کر دیاہے ۔ جو مجوزہ طور پر جنوبی پنجاب میں قائد اعظم ونڈ پارک میں قائم کئے جائیں گے جس سے ایک ہزار میگا واٹ بجلی نیشنل گرڈ میں شامل ہوں گی۔پاکستان توانائی کے شدید بحران کا شکار ہے اور پنجاب حکومت توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے متبادل ذرائع تلاش کرنے کے لیے کوشاں ہے،ویسٹاس نے جنوبی پنجاب میں ونڈ انرجی کے منصوبوں کے لیے اس صنعت کی مشہور ٹیکنالوجی سائٹ ہنٹ Hunt کا استعمال کرتے ہوے 2014میں مفصل تجزیہ کیا ہے جس کے نتیجے میں ونڈ انرجی کے ایک ہزارمیگاواٹ کے چار پاور پلانٹ کی نشاندہی کی گئی ہے جن کی مجموعی صلاحیت ایک ہزار میگاواٹ تک ہوگی۔حکومت پنجاب اور ویسٹاس کے درمیان مفاہمت کی یادداشت پر دستخط فروری 2015میں دستخط کیے گئے تھے۔مفاہمت کی یادداشت کے مطابق ویسٹاس ڈینش سفارتخانے کے تعاون سے پنجاب حکومت کو ونڈ انرجی کے ایک ہزار میگاواٹ کے منصوبوں کے لیے 2.2 بلین امریکی ڈالرز کی سرمایہ کاری میں مدد دے گی۔اظہار دلچسپی جاری کرنے کی تقریب گزشتہ دنوں وزیراعلی ہاوس میں ہوئی جس میں وزیراعلی پنجاب شہبازشریف اور ڈنمارک کے وزارت خارجہ کے پو لیٹکل ڈائریکٹر سفیر جسپرمو لر سورنسن ،ویسٹاس ایشیا کے نائب صدر جرراڈکریوکے علاوہ دیگر اعلی حکام بھی شریک تھے۔ڈنمارک کے پولیٹیکل ڈائریکٹر جسپر مولر سورنسن جو کہ2013-2015 میں پاکستان میں سفیر بھی رہے ہیں اور انہوں نے ہی اپنی تعیناتی کے دوران وزیراعلی شہباز شریف کو ویسٹاس سے متعارف کروایا اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان عالمی کمپنیوں خاص طور پر توانائی کے شعبے میں انتہائی دلچسپی رکھتا ہے ا نہوں نے کہا کہ پاکستان متبادل توانائی کے ذرائع کی طرف تیزی سے بڑھ رہا ہے اور ونڈ انرجی کے حوالے سے وسائل سے مالا مال ہے اور ڈنمارک کی کمپنیاں اس شعبے میں تجربے،صلاحیت اور ٹیکنالوجی میں مہارت رکھتی ہے اور ویسٹاس اس سلسے میں کلیدی حثیت رکھتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ میں انتہائی کم عرصے میں تعاون کو فروغ دینے پر حکومت پنجاب اور ویسٹاس کو مبارکباد دیتا ہوں، انہوں نے بتایا کہ ابھی ڈیڑھ سال پہلے حکومت پنجاب کو ویسٹاس کی تکنیکی مہارتوں کے بارے میں بتایا گیا تھا اور مجھے قوی امید ہے کہ کہ یہ پراجیکٹ پنجاب کی توانائی کی ضروریات پوری کرنے میں اہم کردار ادا کرے گا اور اس منصوبے کے علاوہ بھی ڈنمارک کی حکومت پاکستان کی متبادل توانائی کی صلاحیت میں اضافے میں تعاون کے لیے تیار ہے۔ڈنمار ک کی حکومت پاکستان میں متعلقہ حکومتی اداروں کے ساتھ مل کر ونڈ پالیسی، ونڈ کی ٹیکنالوجی اور سرمایہ کاری میں تعاون کا سوچ رہی ہے۔ونڈ توانائی کا پہلا 250میگاواٹ کا پہلا پلانٹ2018 تک بجلی فراہم کرنا شروع کر دے گا۔

ڈنمارک کی ویسٹاس ونڈ سسٹمز 74ممالک کو توانائی کی سہولیات فراہم کرتی ہے اور اکہتر گیگاواٹ توانائی پیدا کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے، اس موقع پر ویسٹاس ایشیا کے نائب صدر جرراڈکریو نے منصوبے کے پارے میں حاضرین کو بتایا کہ ایشیااور خاص طور پر پاکستان میں ویسٹاس توانائی کی شعبے میں تعاون کے لیے پر عزم ہے،انہوں نے کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ ہم نے پنجاب حکومت کے ساتھ تعاون میں ایک اہم سنگ میل کو عبور کر لیا ہے اور ویسٹاس نے سائٹ ہنٹ تیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوے پنجاب میں ونڈ انرجی کی پیداوار کی ایسی جگہوں کی نشاندہی کی ہے جنہیں ماضی میں نظر اندا ز کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم وزیر اعلی پنجاب اور ان کی حکومت کے مفاہمت کی یاداشت پر کام کو آگے بڑھانے پر تعاون اور مدد کے شکر گزار ہیں اور اس زبردست منصوبے کی جلد فزیبیلٹی، دیگر لوازمات اور جلد کام شروع کرنے کی امید کرتے ہیں۔

ہر گزرتے دن ویسٹاس ماحولیاتی تبدیلی کے خلاف جنگ کے طور پر گرین انرجی پیدا کر رہا ہے، ویسٹاس کی 55,700 ٹربائنز سالانہ 60 ملین ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ استعمال کرتے ہوئے اس کے بدلے میں محفوظ توانائی فراہم کر رہی ہیں۔ویسٹاس ونڈ سسٹمز 74ممالک کو توانائی کی سہولیات فراہم کرنے کے علاوہ 19,500 کو ملازمت کے مواقع بھی فراہم کر رہی ہے ۔71 گیگا واٹ انرجی پیدا کرنے کی صلاحیت کے ساتھ ساتھ انڈسٹری میں 52 فیصد حصے کے تحت ویسٹاس ونڈ انرجی کی پیداوار اور ٹیکنالوجی میں مارکیٹ لیڈر ہے۔

پیاف کے چیئر مین عرفان اقبال شیخ کا کہنا ہے کہ حکو مت پنجا ب کی جانب سے توانائی بحران کے خاتمہ میں مد د کے لیے ہوا سے توانائی حاصل کر نے کے منصوبے پنجاب کو اندھیروں سے نکال دیں گے ۔جس سے استفادہ حاصل کرنے کے لیے پنجاب بھر میں انڈسٹریز کا جال بچھایا جائے گا اور ملکی معیشت مستحکم ہو گی ۔انھوں نے بتایا کہ عالمی سطح پر ونڈ انرجی کو اس سے پہلے اتنا عروج حاصل نہیں تھا۔ 2015میں پوری دنیا میں چالیس ہزار میگاواٹ توانائی پیدا کی گئی جس کی ایک وجہ توانائی کے دوسرے متبادل ذرائع کے مقابلے میں ٖونڈ انرجی نہ صرف سستی ہے بلکہ عالمی ماحول کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔عرفان اقبال شیخ نے بتایا کہ ملک میں پیدا ہونے والی بجلی میں میں سے 54فیصد بجلی ہائیڈل جبکہ چھیالیس فیصد بجلی تھرمل ذرائع سے پیدا کی جارہی ہے۔ ہائیڈل ذرائع میں تربیلا ڈیم اور منگلا ڈیم ڈیم نمایاں ہیں جبکہ غازی بروتھا ابھی تکمیل کے مراحل میں ہے ۔ تھرمل ذرائع میں فرنس آئل اور گیس شامل ہیں۔یہ امر قابلِ ذکر ہے کہ تھرمل ذرائع سے پیدا ہونے والی کا ساٹھ فیصد حصّہ گیس جبکہ چالیس فیصد حصّہ فرنس آئل سے پیدا ہوتا ہے۔ ہمارے ٹوٹل آئل بل کا ساٹھ فیصد حصّہ بجلی پیدا کرنے کی غرض سے استعمال ہونے والے فرنس آئل کی مد میں ہے جبکہ ملک میں گیس کل کھپت کا اڑتالیس فیصد حصّہ تھرمل ذرائع سے بجلی کی پیداوار پر استعمال ہورہا ہے۔اگر پنجاب میں ونڈ انرجی کے منصوبے جلد شروع ہو جائیں تو اس سے انڈسٹری مالکان میں بھی خوش کی لہر دوڑے گی ۔

پنجاب سر مایہ کاری بور ڈ اینڈ ٹر یڈ کے چیئر مین عبدالباسط کا کہنا تھا کہ حکو مت پنجاب توانائی بحران کے خاتمہ کے لیے تمام تر اقدامات بروئے کار لاتے ہوئے انتھک محنت کر رہی ہے جس کے نتیجہ میں کئی ایک منصوبے تکمیل کے مراحل میں ہیں ۔انھوں نے کہا کہ پنجاب میں ونڈ کے ذریعے انر جی حاصل کرنے کے لیے کوریڈور مو جو د ہے جو ہیں تو کم تاہم اس پر بھی حکومت ڈنمارک سے معائدے کر رہی ہے کہ ونڈ انر جی پلانٹس لگائیں جائیں تاکہ انر جی بحرا ن میں کمی واقع ہو سکے ۔ انھوں نے بتایا کہ پنجاب سر مایہ کاری بور ڈ غیر ملکی سر مایہ کاروں کو انر جی کے منصوبوں پر کام کر نے کے لیے انتھک کام کر رہی ہے جس کے نتیجہ میں توانائی بحران کے خاتمہ کے لیے در جنوں منصو بو ں پر کام جاری ہے ۔انھوں نے کہا کہ ونڈ انرجی منصو بہ شر وع ہو نے کے بعد پاکستان میں انر جی بحران کے خاتمہ میں بہت مد د ملے گی ۔

حکو مت پنجا ب کی جانب سے توانائی بحران کے خاتمہ کے لیے ہوا سے توانائی حاصل کر نے کے منصوبے پنجاب کو اندھیروں سے نکال دیں گے ۔چیئر مین پیاف

ونڈ انر جی منصوبے کی تکمیل کے بعد پنجاب بھر میں انڈسٹریز کا جال بچھایا جائے گا جس سے ملکی معیشت مظبو ط ہو گی ۔ عرفان اقبال شیخ

حکو مت پنجاب توانائی بحران کے خاتمہ کے لیے تمام تر اقدامات بروئے کار لاتے ہوئے انتھک محنت کر رہی ہے۔چیئر مین پنجاب سر مایہ کاری بور ڈ اینڈ ٹر یڈ

پنجاب میں ونڈ کے ذریعے انر جی حاصل کرنے کے لیے کوریڈور مو جو د ہے۔عبدالباسط

عرفان اقبال شیخ اور عبدالباسط کی تصاویر بھی لگانی ہیں بھائی ۔

مزید :

ایڈیشن 2 -