مالی سال کے ساڑھے 7 ماہ ، سندھ حکومت صرف 45 فیصد بجٹ استعمال کرسکی

مالی سال کے ساڑھے 7 ماہ ، سندھ حکومت صرف 45 فیصد بجٹ استعمال کرسکی
مالی سال کے ساڑھے 7 ماہ ، سندھ حکومت صرف 45 فیصد بجٹ استعمال کرسکی

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)مالی سال کے ساڑھے سات ماہ گزر گئے مگر ترقی کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے اور سندھ حکومت 2015-16 کے بجٹ کے صرف 45 فیصد فنڈز ہی جاری کرسکی ہے۔

محکمہ خزانہ کی رپورٹ کے مطابق مالی سال کے ساڑھے سات ماہ گزر گئے مگر سندھ میں 55 فیصد فنڈز جاری نہ ہوسکے اور سائیں سرکار صرف 63 ارب روپے ہی جاری کرسکی ہے جبکہ محکمہ خزانہ مختص بجٹ کے 79 ارب روپے جاری کرنے میں ناکام رہا ہے جس کی وجہ سے تعلیم، پانی ، سڑکوں کی تعمیر، محکمہ خزانہ، خوراک کے منصوبے تاخیر کا شکار ہورہے ہیں ۔

سندھ حکومت اب تک محکمہ صحت کیلئے مختص بجٹ میں سے صرف 9529 ملین روپے جاری کرسکی ہے۔ کھیل کے میدانوں کو آباد کرنے کیلئے 54 فیصد فنڈز جاری نہ ہوسکے، ترقیاتی منصوبوں کیلئے 142 ارب روپے کا بجٹ مختص تھا اور اس کا اکثر حصہ بھی بے کار پڑا ہے جبکہ حکومت توانائی منصوبوں کیلئے ایک روپیہ بھی جاری کرنے میں ناکام رہی ہے۔

مزید :

بزنس -اہم خبریں -