نثار کا حکم، غیر متعلقہ افسران کی ڈیوٹی پر مامور 311 اہلکار واپس آگئے

نثار کا حکم، غیر متعلقہ افسران کی ڈیوٹی پر مامور 311 اہلکار واپس آگئے
نثار کا حکم، غیر متعلقہ افسران کی ڈیوٹی پر مامور 311 اہلکار واپس آگئے

  

اسلام آباد (آئی این پی، اے پی پی) ترجمان وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ سابقہ اور غیر متعلقہ افسران کی ڈیوٹی پر مامور 311 اہلکار وزیرداخلہ کے حکم پر واپس آگئے جبکہ واپس نہ آنے پر 24 اہلکار معطل کر دیئے گئے۔ ترجمان وزارت داخلہ کے مطابق سابقہ اور غیر متعلقہ افسران کی ڈیوٹی پر مامور 311 اہلکار وپس آگئے۔ وزیر داخلہ چوہدری نثار نے غیر مجاز افسران کی ڈیوٹی پر مامور اہلکار وں کی واپسی کا حکم دیا تھا۔ وزیرداخلہ نے حکم دیا کہ ساتھ دن کے اندر معطل اہلکار واپس نہ آئے تو برخاست کر دیئے جائینگے۔ انہوں نے کہا کہ بار بار ہدایت کے باوجود اہلکار سالہا سال سے کیوں غیر حاضر تھے، آئی جی اسلام آباد اور ایف سی کمانڈنٹ سے جواب طلبی کی جائے۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ غیر حاضراہلکار سرکاری خزانے سے کس طرح تنخواہ لیتے رہے۔ حکومتی وسائل کا ذاتی استعمال روکنے کیلئے واضح ضابطہ کار بنایا جائے۔ اے پی پی کے مطابق وزیر داخلہ چوہدری نثار نے محکمہ تعلیم راولپنڈی میں 49 گھوسٹ ملازمین کے سکینڈل کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی سی اوراولپنڈی اور ای ڈی او ایجوکیشن کو 19 فروری تک مہلت دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر اس دوران سکینڈل کے تمام ذمہ دار ان گرفتار نہ ہوئے تو انتظامی افسران کے خلاف ایف اائی اے کے ذریعے کارروائی کی جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ تنی اندھیر نگری ہے کہ راولپنڈی میں دن دیہاڑے 50 لاکھ روپے کا فراڈ ہوا اور اب تک ذمہ داروں کا تعین نہیں ہو سکا ۔ وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی طرف سے جب ای ڈی او ایجوکیشن قاضی خان کی طرف سے جب ای ڈی او ایجوکیشن قاضی ظہور الحق سے پوچھا گیا کہ بتائیں کہ دن دیہاڑے محکمہ تعلیم میں جو 50 لاکھ کا فراڈ ہوا ہے اس کا کیا ہوا تو انہوں نے بتایا کہ ہم نے انکوائری کر کے رپورٹ ڈی سی او کو بجھوائی ہے اب ڈی سی او اس بارے میں حتمی فیصلہ کریں گے۔

مزید :

اسلام آباد -