دھماکوں نے ثابت کر دیا حکومت اپنی ذمہ داری کو پورا کرنے میں ناکام ہو گئی : سراج الحق

دھماکوں نے ثابت کر دیا حکومت اپنی ذمہ داری کو پورا کرنے میں ناکام ہو گئی : ...

  

لاہور(وقائع نگار)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت کی ذمہ داری امن و امان کا قیام ہے اور اسے عوام کو جان ومال کا تحفظ دینے کو ترجیح دینی چاہئے مگر کوئٹہ ،کراچی ،مردان اور لاہور کے دھماکوں نے ثابت کردیا ہے کہ حکومت اپنی اس ذمہ داری کو پورا کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوگئی ہے۔ سیکیورٹی انتظامات میں بڑی بڑی دراڑیں موجود ہیں جنہیں بند کرنے کی ضرورت ہے ،لیکن حکومت مسلسل غفلت برت رہی ہے۔ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو مل کر عوام کے تحفظ کیلئے ایک واضح پالیسی بنا نا ہوگی۔حکومت نے فاٹا میں ایک کروڑ پاکستانیوں کو قید کررکھا ہے اور سوسال پرانا ایف سی آر کا قانون تبدیل کرنے اور انہیں سیاسی حقوق دینے کو تیار نہیں۔حکومت کے پاس قبائلی علاقوں کے عوام کا اعتماد حاصل کرنے کا سنہری موقع ہے جسے ضائع نہیں کرنا چاہئے۔ قبائلی علاقوں کوفوری طور پر خیبر پختو نخوا میں ضم کیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سینیٹ اجلاس کے موقع پر پارلیمنٹ کے باہر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ لا ہور کا واقعہ انتہائی اندوہناک اور قابل مذمت ہے جس نے دہشت گردی کو کچل دینے کے تمام حکومتی دعوؤں کا پول کھول دیا ہے اور ثابت کردیا ہے کہ حالات حکومت کے کنٹرول میں نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ اس حوالے سے قوم کو اعتماد میں لے اور اپنا موقف واضح کرے ،آئے روز دہشت گردی کے واقعات رونما ہورہے ہیں جن سے ثابت ہوتا ہے کہ امن عامہ حکومت کی کسی ترجیح میں نہیں اور تمام حکومتی وزراء4 صرف حکمران خاندان کے دفاع میں لگے ہوئے ہیں۔انہوں نے لاہوردھماکہ کی شدید مذمت کر تے ہوئے متاثرہ خاندانوں سے گہری ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کیا۔ سراج الحق نے ڈپٹی چیئر مین سینیٹ مولانا عبد الغفور حیدری کو امریکہ کی طرف سے ویزا نہ دینے کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ٹرمپ کی پالیسیاں بہت جلد امریکہ کو لے ڈوبیں گی،جس طرح گوربا چوف کی پالیسیوں نے روس کے ٹکڑے کئے تھے اسی طرح ٹرمپ کی انتہا پسندی امریکہ کے ٹکڑے کرے گی۔ ٹرمپ ہر روز عالم اسلام کے خلاف ایک نیا اعلان جنگ کرتے ہیں،قبائلی علاقوں کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ تمام قبائل کا اتفاق ہے کہ انہیں خیبر پختونخواہ میں ضم کردیا جائے اور ایف سی آر کا قانون ختم کرکے انہیں ملکی آئین میں موجود عام پاکستانیوں کے جو حقوق ہیں وہی حقوق انہیں دے دیئے جائیں۔

مزید :

صفحہ آخر -