صوبائی دارالحکومت سوگ میں ڈوبارہا ، پرچم سرنگوں ، مارکیٹیں بند ، وکلا ء تنظیموں کی ہڑتال

صوبائی دارالحکومت سوگ میں ڈوبارہا ، پرچم سرنگوں ، مارکیٹیں بند ، وکلا ء ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر،وقائع نگار،کامرس رپورٹر،نامہ نگار خصوصی)پنجاب اسمبلی کے سامنے مال روڈ پر ہونیوالے خود کش حملے کے اگلے روز صوبائی دارالحکومت کی فضا سوگوار رہی ،زندہ دلان لاہور کے چہروں پر افسردگی چھائی رہی سرکاری طور پر ایک روز ہ سوگ کے اعلان پر پنجاب اسمبلی ،سول سیکریٹریٹ ،ایوان وزیر اعلیٰ ،گورنر ہاؤس سمیت دیگر سرکاری عمارتوں پر قومی پرچم سرنگوں رہا ۔دھماکے کے سو گ میں شہر کی 80فیصد تھوک ،چھوٹی و بڑی مارکیٹیں اور بازار بند رہے جبکہ پوش علاقوں میں واقع تجارتی مراکز کھلے رہے ۔پاکستان بار، پنجاب بارسمیت دیگروکلا ء تنظیموں کی کال پر مال روڈ پردہشت گردی کے واقعہ کیخلاف گزشتہ روزملک بھر میں یوم سوگ منایا گیا اور لاہور سمیت ماتحت عدالتوں میں وکلاء نے ہڑتال کی ،لاہور بار ایسوسی ایشن نے سول و سیشن عدالتوں میں عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ کیا تاہم لاہور ہائیکورٹ میں وکلا ء عدالتوں میں پیش ہوتے رہے ۔سانحہ کے سوگ میں تمام سرکاری اور نجی تقریبات منسوخ کر دی گئیں ۔اس کے ساتھ ساتھ ویلنٹائن ڈے کی تقریبات اور میوزیکل شوز بھی منعقد نہ ہو سکے تفصیلات کے مطابق دھماکے کے سو گ میں شہر کی 80فیصد تھوک ،چھوٹی و بڑی مارکیٹیں اور بازار بند رہے جبکہ پوش علاقوں میں واقع تجارتی مراکز کھلے رہے جبکہ تاجر تنظیموں کے رہنماؤ ں نے دھماکے میں ہونے والے شہداء کے لیے فاتحہ خوانی اور تعزیتی اجلاس بلائے ۔گزشتہ روز شہر کی تھو ک مارکیٹیں جن میں اعظم کلاتھ مارکیٹ ، اکبر ی منڈی ، اردو بازار ، شو مارکیٹ ، لو ہا مارکیٹ مصری شاہ سمیت شاہ عالم مارکیٹ ،عابد مارکیٹ ، انارکلی ، مال روڈ ، بیڈن روڈ ،ہال روڈ،شیشہ مارکیٹ ، نیلا گنبد ، گڈز مارکیٹ ، لو ہاری ، بانو بازار ، اچھرہ بازار ، میڈیسن مارکیٹ ،گنپت روڈ، پرانی انارکلی ، کوئینز روڈ، شادمان مارکیٹ ،برانڈرتھ روڈ، دل محمد روڈ ، پتھر مارکیٹ ، ریلو ے روڈ ،جیو لرز مارکیٹ ، سینٹری مارکیٹ ، ماربل مارکیٹ ،سوہا بازار سمیت سر کلر روڈ کی مارکیٹیں بند رہیں جبکہ پو ش علاقوں میں واقع تجارتی مراکز جن میں ڈیفنس مارکیٹ، لبر ٹی مارکیٹ ، فر دوس مارکیٹ میں کاروباری سر گر میاں معمول کے مطابق چلتی رہیں جبکہ گلبرگ سے ملحقہ مارکیٹیں جزوی طورپر کھلی رہیں ۔تاجر تنظیموں کے رہنماؤ ں کی جانب سے سانحہ مال روڈ کے شہداء کے ایصال ثواب کے لیے قرآن خوانی اور دعا کی گئی ۔مسلم لیگ ن ٹر یڈرز ونگ کی جانب سے شہداء کیلئے تعزیتی اجلاس بلایا گیا جس کی صدارات چیئر مین عرفان اقبال شیخ نے کی ۔اس موقع پر سانحہ مال روڈ پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے دہشت گر دی کی پرزور مذمت کی گئی تاجر رہنماؤ ں نے حکو مت سے مطالبہ کیا ہے کہ امن و امان کی غیر یقینی صورتحال کے باعث لاہور کے تجارتی مراکز ، تفریحی مقامات اور اہم عمارتوں کی سیکیورٹی میں اضافہ کیا جائے ۔دوسری طرف فارمیسیاں اور میڈیکل سٹور بند رہے جبکہ مارکیٹوں میں بھی جزوی ہڑتال رہی مال روڈ سمیت پورے شہر میں سوگ کا سما ں رہا ۔دوسری طرف پاکستان بار، پنجاب بارسمیت دیگروکلا ء تنظیموں کی کال پر مال روڈ پردہشت گردی کے واقعہ کیخلاف گزشتہ روزملک بھر میں یوم سوگ منایا گیا اور لاہور سمیت ماتحت عدالتوں میں وکلاء نے ہڑتال کی ،لاہور بار ایسوسی ایشن نے سول و سیشن عدالتوں میں عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ کیا تاہم لاہور ہائیکورٹ میں وکلا ء عدالتوں میں پیش ہوتے رہے ، لاہور ہائیکورٹ بار نے بھی سانحہ چیئرنگ کراس کیخلاف جنرل ہاؤس کا اجلاس منعقد کیا جس میں سانحہ چیئرنگ کراس دھماکے کیخلاف قرار داد مذمت منظور کی گئی اور سانحہ کے شہدا کے لئے اجتماعی دعا کرائی گئی، وائس چیئرمین پاکستان باراحسن بھون، ممبرپاکستان بارحفیظ الرحمان چودھری،اعظم نذیرتارڑ،وائس چیئرمین احسن بھون،وائس چیئرمین پنجاب بارکونسل ملک عنایت اللہ اعوان ، چیئرمین ایگزیکٹو کمیٹی پنجاب بارسید عظمت علی بخاری ، لاہور ہائیکورٹ بار کے صدر رانا ضیا عبدالرحمن سمیت دیگروکلا رہنماؤں نے سانحہ مال روڈ کی بھرپورمذمت کرتے ہوئے واقعہ کے ملزموں کی فوری گرفتاری اورذمہ داروں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔وکلاء نے بار رومز پر سیاہ پرچم لہرا ئے اور بازوؤں پر کالی پٹیاں باندھ کر یوم سوگ منایا،وکلاء نے مذمتی قراردادیں بھی منظو رکیں اور اس عزم کا اظہار کیا کہ پوری قوم دہشت گردوں کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہے اور دہشت گردوں کے مکمل خاتمہ تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ،وکلاء رہنماؤں نے دہشت گردی کے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچانے کے لئے بھرپور اقدامات کئے جائیں۔

ہرتال ،سوگ

لاہور ( خبر نگار ) سا نحہ چیئر نگ کراس کے بعد پولیس دفا تر میں سوگ کا سما ں رہا ، ڈی آئی جی ٹر یفک کیپٹن (ر) احمد مبین زید ی اور ایس ایس پی آپریشن زاہد محمو د گو ندل کے دفا تر میں ٹریفک وارڈنز اور پو لیس اہلکا ر دن بھر زاروقطار وتے رہے۔ ڈی آئی جی ٹریفک کے دفتر میں ٹریفک وارڈنز عثما ن، منیر خان ، مشتاق احمد ،بلال احمد ،رائے نواز اور مشتا ق کلو اسلم علی ہرل، افضل وٹواور امجد اقبال نے روزنا مہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ڈی آئی جی ٹر یفک کیپٹن (ر) احمد مبین زیدی انتہائی شفیق افسر تھے ۔ٹریفک پولیس میں آنے کے بعد ٹر یفک پولیس کے شعبہ میں تبدیلی لائی ہے ٹر یفک وارڈنز رائے مشتا ق اور بلا ل احمد نے بتا یا کہ انہوں نے کبھی ڈانٹا تک نہیں تھا ، ان کی شہا دت نے ٹر یفک پو لیس تو الگ بات محکمہ پو لیس کو ہلا کر رکھ دیا ہے ان کی یا دیں بر سوں نہیں بھلا سکیں گے اس مو قع پر ایس ایس پی آپر یشن زاہد محمود گوندل کے ریڈر عا رف ڈوگر ،نائب ریڈر اسلم سٹاف افسر چوہدری نبی احمد اے ڈی آپر یشن افتخا ر انور، کلر ک میاں اسلم اور اکا ؤ نٹنٹ میا ں مظہر سمیت دفتر کے دیگر سٹا ف نے اپنے تاثرات میں بتا یا کہ ایس ایس پی آپر یشن انتہا ئی مخلص افسر تھے ، اپنے بچوں اور بھا ئیو ں کی طر ح پیا ر کر تے رہے کبھی کسی با ت پر تلخ نہیں ہو ئے تھے بلکہ آنیوالے سا ئین کی بات بھی بڑے غو ر سے سنتے تھے ، انہوں نے اپنے تاثرات میں بتایا کہ آج ان دونوں اعلیٰ افسروں کی شہادت کے ان کے دفاتر میں موجود نہ ہونے پر دفاتر ویران لگ رہے ہیں انہوں نے بتایا کہ دفاتر میں کام کرنا تو الگ بات ہے بیٹھنے کو دل تک نہیں کررہاہے ۔ دو سر ی جا نب دفاتر میں سوگ کا سماں رہاتھا ۔ اور ٹریفک وارڈنز سمیت پو لیس اہلکا ر دفا تر میں زارو قطا ر روتے رہے ۔اس کے علاوہ آئی جی آفس ،سی سی پی او آفس سمیت محکمہ پو لیس کے دیگر دفا تر اور تھا نوں میں سوگ کا سما ں رہا ہے اور پو لیس افسران زا رو قطار روتے رہے اور ڈی آئی جی احمد مبین زیدی ،اور ایس ایس پی آپر یشن کی تعر یفیں کرتے رہے۔

پولیس دفاتر

لاہور(جنرل رپورٹر،وقائع نگار)شہر کے سرکاری ہسپتالوں میں دن بھر اعلیٰ شخصیات سمیت عام شہری بھی سانحہ میں زخمی ہونیوالوں کی عیادت کے لئے ہسپتالوں میں آتے رہے۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سروسز اور گنگا رام ہسپتال میں خودکش دھماکہ کے زخمیوں کی عیادت کی ۔قبل ازیں وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف ،عمران خان ،قمر زمان کائرہ ،سرج الحق ،لیاقت بلوچ ،حمزہ شہباز سمیت دیگر اہم شخصیات نے ہسپتالوں میں زخمیوں کی عیادت کی ۔حمزہ شہباز نے بھی میو ہسپتال میں زخمیوں کی عیادت کی اور انہیں پھول پیش کئے اس موقع پر ہسپتال کے چیف ایگزیکٹو پروفیسر اسد اسلم خان ،ایم ایس ڈاکٹر طاہر خلیل اور پروفیسر خالد مسعود گوندل بھی ان کے ہمراہ تھے۔

عیادت

مزید :

صفحہ اول -