دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف بھرپور ریاستی قوت استعمال کرنے کا فیصلہ، سیاسی و عسکری قیادت پرعزم

دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف بھرپور ریاستی قوت استعمال کرنے کا ...
دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف بھرپور ریاستی قوت استعمال کرنے کا فیصلہ، سیاسی و عسکری قیادت پرعزم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)ملک کی سیاسی و عسکری قیادت کا داخلی و خارجی دہشت گردوں کے خلاف بھرپور ریاستی قوت استعمال کرنے اور ان کا جسمانی و نظریاتی وجود کچلنے کا فیصلہ  ،فوج، سول آرمڈ فورسز اور پولیس کے آپریشنز کے فوائد ضائع نہیں ہونے دیں گے ، ریاست اس بات کو یقینی بنائے گی کہ دہشت گرد دوبارہ سر نہ اٹھا سکیں، دہشت گردی کابیانیہ مسترد ہوچکا ،صرف امن،استحکام اورخوشحالی کابیانیہ ہی چھاچکا ہے،دہشت گردی کی تازہ لہر کے بعد وزیر اعظم کی نواز شریف کی زیر صدارت سیاسی و عسکری قیادت کے اجلاس میں اہم فیصلے ۔

پشاور میں دھماکہ اور عمران خان کا دورہ۔۔۔ ایسی خبر آ گئی کہ پاکستانی کانپ اٹھیں گے

تفصیلات کے مطابق لاہور اور پشاور سمیت  ملک کے مختلف علاقوں میں حالیہ دہشت گردی کے واقعات  اور اس کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال سے نمٹنے کے لئے  وزیراعظم نواز شریف کی زیرصدارت سیاسی و عسکری قیادت کا اہم اجلاس ہوا ،اجلاس میں دہشت گردوں کو ملک میں  دوبارہ سر اٹھانے کا موقع نہ دینے اور انہیں کچلنے کے لیے پوری ریاستی قوت استعمال کرنے کا  اصولی فیصلہ کیا گیا ، اس مقصد کے لیے ملک کے اندر اور باہر نہ صرف دہشت گردوں بلکہ ان کے سہولت کاروں کا بھی خاتمہ کیا جائے گا۔وزیر اعظم کی زیر صدارت اجلاس میں وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان، وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحاق ڈار، پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ، چیف آف جنرل سٹاف لیفٹیننٹ جنرل بلال اکبر، نیشنل سکیورٹی ایڈوائزر لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر خان جنجوعہ، ڈی جی کاؤنٹر ٹیررازم، ڈی جی آئی بی اور دیگر سینئر حکام نے شرکت کی۔

اجلاس میں عزم کیا گیا کہ دہشت گردی کے حالیہ واقعات حکومت کی بھرپور کارروائیوں کا ردعمل ہیں،ریاستی اداروں کی بھرپورکوششوں سے دہشتگردعناصر اور ان کے سہولت کاروں کوختم کردیاجائے گا۔اجلاس کو بتایا گیا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مسلح افواج، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں اور عوام نے بے مثال قربانیاں دی ہیں، دہشت گردی کا بیانیہ ناکام ہوا ہے اور امن و استحکام اور خوشحالی کے بیانیہ نے اس پر غلبہ پایا ہے۔اجلاس میں لاہور،کوئٹہ،پشاور اور مہمند ایجنسی میں دھماکوں کی مذمت  اور جان کا نذرانہ پیش کرنے والے قومی ہیروز کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -