پاکستان سٹاک مارکیٹ ، اتار چڑھاؤ کے بعد مندا ، انڈیکس 44ہزار کی حد سے نیچے چلا گیا

پاکستان سٹاک مارکیٹ ، اتار چڑھاؤ کے بعد مندا ، انڈیکس 44ہزار کی حد سے نیچے چلا ...

  

 کراچی(اکنامک رپورٹر)پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں بدھ کو بھر مندی چھاگئی ،امریکہ کی جانب سے پاکستان کو گلوبل ٹیرسراسٹ فنانسگ واچ لسٹ میں ڈالنے کی تحریک کے پیش نظر غیر ملکی سرمایہ کاروں نے حصص کی فروخت کو ترجیع دی جس کے زیر اثر مقامی سرمایہ کار بھی سرمایہ کاروں میں بھی سرمایہ نکالنے کا رجحان بڑھ گیا جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس 337.32پوائنٹس کی کمی سے 43353.04پوائنٹس کی سطح پر آگیااور280کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی جس سے سرمایہ کاروں کو 73ارب 65کروڑ29لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑاالبتہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم منگل کی نسبت قدرے بہتر رہا۔کاروباری ہفتے کے تیسرے روز بدھ کو پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں کاروبار کا آغاز مثبت زون میں ہوااور کے ایس ای100انڈیکس 91پوائنٹس بڑھ کر 43782پوائنٹس پر جا پہنچا تاہم بعد ازاں غیر ملکی سرمایہ کاروں نے اپنا سرمایہ نکالنا شروع کردیا جس کے زیراثرمقامی انسٹی ٹیوشنز اور بروکریج ہاؤسز کی جانب سے بھی فروخت کا دباؤ بڑھ گیا اور انڈیکس منفی زون میں چلا گیا جس کے سبب مارکیٹ پر مندی کے بادل چھا گئے اور کاروبار کے اختتام تک مارکیٹ منفی زون میں رہی جس کے سبب کے ایس ای100انڈیکس 43600،43500 اور43400پوائنٹس کی 3بالائی حد سے گر گیااورپاکستان اسٹاک مارکیٹ میں کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس میں 337.32 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے انڈیکس 43690.36 پوائنٹس سے کم ہو کر 43353.04 پوائنٹس پر بند ہوا جبکہ کے ایس ای 30 انڈیکس 126.25 پوائنٹس کی مندی سے 21665.14 پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 31567.45پوائنٹس سے کم ہو کر 31304.17پوائنٹس پر آگیا۔مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 73ارب 65کروڑ29لاکھ92ہزار 440روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے سبب مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 90کھرب79ارب 91کروڑ12لاکھ 16ہزار923روپے سے گھٹ کر 90کھرب6ارب25کروڑ82لاکھ24ہزار483روپے ہو گیا ۔بدھ کو مارکیٹ میں 7ارب روپے مالیت کے 20کروڑ69لاکھ 87ہزار حصص کے سودے ہوئے جبکہ منگل کو 7ارب روپے مالیت کے 20کروڑ36لاکھ 86ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے ۔گزشتہ روز مجموعی طور پر 370 کمپنیوں کے حصص کا لین دین ہوا جن میں سے 76 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں تیزی، 280 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں مندی اور 14 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ سب سے زیادہ تیزی آئسلینڈ ٹیکسٹائل کے حصص کی قیمت میں ہوئی جس کے حصص کی قیمت 47 روپے کے اضافے سے 1075 روپے پر بند ہوئی۔ اسی طرح شیزان انٹرنیشنل کے حصص کی سودے بھی 23.99 روپے کی تیزی سے 564.99 روپے پر بند ہوئے۔ سب سے زیادہ مندی رفحان میز پروڈکٹس اور ویتھ پاک لمیٹڈ کے حصص کی قیمتوں میں ہوئی۔ رفحان میز پروڈکٹس کے حصص کی قیمت 100 روپے کی مندی سے 7300 روپے اور ویتھ پاک لمیٹڈ کے حصص کی قیمت بھی 92.81 روپے کی کمی سے 1797.19 روپے رہ گئی۔ سب سے زیادہ کاروبار یونیٹی فوڈز لمیٹڈ کے حصص میں ہوا جو 1 کروڑ 14 لاکھ 67 ہزار 500 شیئرز رہا جس کی قیمت 26.05 روپے سے شروع ہو کر 24.76 روپے پر بند ہوئی جبکہ فوجی فوڈز لمیٹڈ کے 1 کروڑ 14 لاکھ 7 ہزار حصص کے سودے 27.64 روپے سے شروع ہو کر 25.36 روپے پر بند ہوئے۔

اسٹاک ماہرین کے مطابق آئندہ دنوں بھی مارکیٹ میں منفی رجحان برقرار رہنے کا امکان ہے ۔

مزید :

کامرس -