چائلڈ لیبر اور جبری مشقت کے خاتمے کیلئے سپیشل یونٹ کا قیام

چائلڈ لیبر اور جبری مشقت کے خاتمے کیلئے سپیشل یونٹ کا قیام

  

لاہور(خبرنگار)چائلڈ لیبر اور جبری مشقت کے خاتمے کے لیے محکمہ لیبر نے ایک سپیشل یونٹ کا قیام اور ماہرین بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔محکمہ لیبر نے اس حوالے سے حکومت سے باقاعدہ اجازت طلب کرلی ہے۔ محکمہ لیبر کے ڈی جی فاروق حمید شیخ نے ’’پاکستان‘‘ کو بتایا کہ محکمہ کی کارکردگی مزید بہتر بنائی جارہی ہے۔ جس میں محکمہ لیبر میں ہیلتھ اینڈ سیفٹی کے لیے الگ سپیشل یونٹ (شعبہ) بنایا جارہا ہے۔ جس میں ماہر بھرتی کیے جائیں گے۔ اور اس کے ساتھ ساتھ مختلف محکموں سے بھی ماہرین کی خدمت حاصل کی جارہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ چائلڈ لیبر اور جبری مشقت کے مکمل خاتمے کے لیے قانون سازی کی گئی ہے۔ جس میں قانون سازی کے بعد محکمہ کی کارکردگی بڑھانے کے لیے محکمہ کا دائرہ کار مزید وسیع کیا جارہا ہے۔جس میں ہیلتھ اور سیفٹی یونٹ کے لیے ایک الگ سپیشل یونٹ قائم کیا جارہا ہے۔ جس کے لیے حکومت سے باقاعدہ اجازت طلب کرلی گئی ہے۔ جس کے بعد چائلڈ لیبر اور جبری مشقت کے خاتمے کے لیے ماہرین کی خدمت حاصل کی جارہی ہیں۔

ڈی جی نے بتایا کہ سیفٹی اینڈ ہیلتھ کے لیے الگ سپیشل یونٹ کے قیام سے محکمہ کارکردگی بہتر ہوگی اور چائلڈ لیبر سمیت جبری مشقت کے خاتمے میں مدد ملے گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -