سینٹروں کے کاغذات منظور کرنے کے خلاف الیکشن کمیشن و دیگر سے جواب طلب

سینٹروں کے کاغذات منظور کرنے کے خلاف الیکشن کمیشن و دیگر سے جواب طلب

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے سینیٹ کے انتخابات کے لئے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے خلاف درخواست پر الیکشن کمشن، وفاقی حکومت اور دیگر مدعاعلیہان سے جواب طلب کر لیا ہے۔ درخواست میں کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال پر مختلف اعتراضات اٹھائیں گئے ہیں۔جسٹس شاہد کریم نے جوڈیشل ایکٹوازم پینل کی درخواست پر سماعت کی جس میں 3مارچ کوہونے والے انتخابات کے لئے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے اقدام کو چیلنج کیا گیا ہے، درخواست میں میں رانا مقبول، شاہین خالد بٹ، سعدیہ عباسی، نزہت صادق، چودھری سرور، حافظ عبدالکریم، مشاہد حسین، زبیر گل اور احمد سعید کرمانی کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔ درخواست گزار وکیل کے مطابق کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کرتے وقت قانونی تقاضے پورے نہیں کئے گئے، درخواست گزار نے قانونی نکتہ اٹھایا کہ ایسے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی بھی منظور کرلئے گئے جن کو سرکاری ملازمت چھوڑے ابھی دو برس کا عرصہ مکمل نہیں ہوا، جانچ پڑتال کے عمل کے دوران امیدواروں کی دوہری شہریت کو بھی نظر انداز کیا گیا،وکیل نے استدعا کی کہ سینیٹ کے انتخابات میں میں کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال میں قانونی تقاضے پورے نہ ہونے پر امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظوری کا اقدام کالعدم قرار دیا جائے، درخواست پر مزید کارروائی 20 فروری کو ہوگی۔

کاغذات منظوری

مزید :

علاقائی -