نشئیوں کیلئے ہسپتال نہ بنانے پر وزارت داخلہ، اینٹی نارکوٹکس سے جواب طلب

نشئیوں کیلئے ہسپتال نہ بنانے پر وزارت داخلہ، اینٹی نارکوٹکس سے جواب طلب

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے نشہ کرنے والوں کی رجسٹریشن اور ان کے لئے سرکاری علاج گاہیں قائم نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر وزارت داخلہ،محکمہ اینٹی نارکوٹکس اور آئی جی جیل خانہ جات سے جواب طلب کر لیاہے۔عدالت کے روبرو درخواست گزارردا قاضی کے وکیل سید معظم علی شاہ نے موقف اختیار کیا کہ کنٹرول آف نارکوٹکس ایکٹ کے تحت نشہ کرنے والوں کی رجسٹریشن کرنا قانون کا تقاضا ہے،قانون کی شق 52اور 53کے تحت نشہ کرنے والوں کے علاج کے لئے منشیات کی سرکاری علاج گاہیں بنانی ضروری ہیں،سرکاری علاج گاہیں نہ ہونے سے نشہ کرنے والوں کا علاج نہیں ہو رہا اور زیادہ تر نوجوان موت کے منہ میں جا رہے ہیں،انہوں نے استدعا کی کہ عدالت قانون کے تحت نشہ کرنے والوں کی رجسٹریشن اور منشیات کی سرکاری علاج گاہیں قائم کرنے کا حکم دے،عدالت نے وزارت داخلہ،محکمہ اینٹی نارکوٹکس اور آئی جی جیل خانہ جات سے جواب طلب کر لیاہے۔

جواب طلب

مزید :

علاقائی -