زکریا یونیورسٹی طالبہ زیادتی کیس، 6 ملزموں کا مزید 2روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

زکریا یونیورسٹی طالبہ زیادتی کیس، 6 ملزموں کا مزید 2روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

  

ملتان (خبر نگار خصوصی)جوڈیشل مجسٹریٹ ملتان نے زکریا یونیورسٹی کی طالبہ سے زیادتی اور ویڈیو بنا کر بلیک میلنگ کرنے کے مقدمہ میں(بقیہ نمبر48صفحہ12پر )

6 ملزموں کامزید2روزہ جسمانی ریمانڈمنظور کرنے کاحکم دیاہے۔ فاضل عدالت میں بہاالدین زکریا یونیورسٹی میں طالبہ سے زیادتی اور ویڈیوزبنانے کے الزام میں گرفتار لیکچرار سمیت چھ ملزمان کو آٹھ روزہ جسمانی ریمانڈ ختم ہونے پر پولیس کی سخت سیکیورٹی میں عدالت میں پیش کیا، ملزموں کے چہروں کو کپڑے سے ڈھانپ کررکھا گیاتھا۔دریں اثناء انچارج تھانہ کی جانب سے ملزموں سے تفتیش کے لئے مز ید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے مؤقف اختیار کیا گیا کہ بہاالدین زکریا یونیورسٹی کی طالبہ مرجان نے مقدمہ درج کرایاکہ یونیورسٹی استاد،کلاس فیلواوراس کے دوستوں نے اس کوزبردستی زیادتی کانشانہ بنانے کے ساتھ قابل اعتراض ویڈیوز بنا کر بلیک میلنگ کرتے اورجنسی طورپرہراساں کیاہے جس پرمقدمہ درج کرکے ملزموں یونیورسٹی کے لیکچرار اجمل مہار ،طالب علموں علی رضا، نشاط اورعثمان،بینک ملازم تنزیل اورمحمدعثمان کو گرفتارکیاگیاہے جن کاطبی معائنہ کرانے کے ساتھ غیراخلاقی ویڈیوز اوردیگر معلومات کی برآمدگی ہونی باقی ہےْ پراسیکیوشن کا کہنا تھا کہ تمام ملزمان کے ڈی این اے فرانزک سائنس لیبارٹری بھجوا دیئے گئے ہیں جبکہ ملزمان سے مزید تفتیش کے لئے چار روزہ جسمانی ریمانڈ لیا گیا ہے ۔ جس پرفاضل عدالت نے مقدمہ میں ملوث ملزموں کامزید4روزہ جسمانی ریمانڈمنظور کرنے کاحکم دیاہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -