نجی ہسپتالوں میں تشویشناک حالت میں لائے مریضوں کیلئے ایمرجنسی سروس خواب

نجی ہسپتالوں میں تشویشناک حالت میں لائے مریضوں کیلئے ایمرجنسی سروس خواب

  

ملتان ( وقائع نگار ) ضلع بھر کے نجی ہسپتالوں میں تشویش ناک حالت میں لائے گئے مریضوں کیلئے ایمرجنسی کی سروس خواب بن گئی ۔ سرکاری ڈاکٹروں کی ملی بھگت سے تشویش ناک والے مریضوں کو فوری طور پر نشترایمرجنسی میں منتقل کرانامعمول بن گیا تاکہ مریض کی موت وقع ہونے پر ہسپتال کے (بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

چلتے ہوئے کاروبار پر منفی اثرات مرتب نہ ہوسکیں ۔ اس بارے میں معلوم ہوا ہے کہ ضلع بھر میں تقریباً چھوٹے بڑے 150سے زائد نجی ہسپتال مختلف علاقوں میں قائم ہیں ۔ جن کی تعمیر پر لاکھوں روپے سے لیکر کروڑوں روپے کی خطیر رقم خرچ کی گئی ہے ان ہسپتالوں کے مالکان نے ہسپتالوں میں جونیئر ڈاکٹرز سے لیکر پروفیسرز لیول کے ڈاکٹروں کو روزانہ کی بنیاد پر ہزاروں روپے کی ادائیگی کے عوض ڈیوٹی پر رکھا ہے ۔ جو دن کے اوقات میں اپنی ڈیوٹی کا وقت سرکاری ہسپتالوں میں گزارنے میں بلکہ بعض مریضوں کو پرائیویٹ ہسپتال میں شام کے وقت کا چیک کرنے کا ٹائم دیا جاتا اور منہ مانگی فیس بھی وصول کی جاتی ہے ذرائع کے کہنا ہے ان نجی ہسپتالوں میں تاحال کو ئی بھی ایمرجنسی کا شعبہ نہیں بنایا گیا صرف ایک چھوٹا سے آئی سی یو کا روم بنایا گیا ہے ان نجی ہسپتالوں میں انتہائی تشویش ناک حالت میں لائے گئے مریضوں کو آئی سی یو میں لیجایا جاتا ہے جہاں علاج کے نام پر ہزاروں روپے خرچ کروادیا جاتا ہے حالت نہ سبھلنے کی صورت میں مذکورہ مریض کو فوری طور پر نشتر ہسپتال کی شعبہ ایمرجنسی میں بھیجوادیا جاتا ہے کہ اگر اس دوران اگر کوئی مریض اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تو اسکی موت نشتر ایمرجنسی کے کھاتے میں ڈال دی جاتی ہے اور اپنے ہسپتال کو نیک نامی کو برقرار رکھ جاتا ہے اس تمام عمل میں نجی ہسپتالوں میں ڈیوٹی کے فرائض سرانجام دینے والے جونیئر وسینئر ڈاکٹر ایم کردار ادا کرتے ہیں نجی ہپسپتالوں میں جو آئی سی یو ہے وہ بھی نہ ہونے کے برابر ہے جہاں صرف ایک نرس اور آکسیجن کی سہولت مہیا ہے ۔ ذرائع کا مزید یہ بھی کہنا ہے کہ ان ہسپتالوں کے مالکان ہسپتال کے چلتے ہوئے کاروبار کو چمکانے کی خاطر ایسی حرکتیں کرتے ہیں عوامی وسماجی افراد کی بڑی تعداد نے مذکورہ صورت حال پر وزیراعلیٰ پنجاب سمیت دیگر متعلقہ حکام سے فوری طور پر نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -