زینب قتل کیس ، ملزم عمران کا اعتراف جرم ، وکیل کیس سے دستبرار ہو گیا

زینب قتل کیس ، ملزم عمران کا اعتراف جرم ، وکیل کیس سے دستبرار ہو گیا

  

لاہور(نامہ نگار)زینب قتل کیس کے ملزم عمران کے وکیل نے اپنا وکالت نامہ واپس لیتے ہوئے کیس سے دستبرداری کا اعلان کردیاہے۔انسداد دہشت گردی کی عدالت نمبر ایک کے جج سجاد احمد نے کوٹ لکھپت جیل میں زینب سمیت 8بچیوں کی بے حرمتی کرنے اور انہیں قتل کرنے کے مقدمہ کے مرکزی ملزم عمران علی کے کیس کی سماعت کی ،دوران سماعت ملزم عمران علی کے وکیل مہرشکیل ملتانی نے اپنا وکالت نامہ واپس لے لیا، ان کا کہنا ہے کہ اقرار جرم کے بعد ضمیر گوارا نہیں کرتا کہ سفاک ملزم کا کیس لڑوں۔واضح رہے کہ سماعت کے پہلے روز فرد جرم عائد ہونے پر ملزم عمران نے اقرار جرم کرلیا تھا ،عدالت نے ملزم کے اعترافی بیان کے بعد بھی ٹرائل جاری رکھنے کا حکم دیا تھا،زینب قتل کیس کے ملزم عمران پر فرد جرم عائد کی جاچکی ہے ،ملزم عمران کے وکیل کی جانب سے دستبرداری کے بعد پراسیکیوٹر جنرل پنجاب نے زینب قتل کیس کے ملزم کو سرکاری وکیل مہیا کردیا اور اب محمد سلطان ملزم عمران کی وکالت کریں گے۔زینب قتل کیس کی گزشتہ روز11گھنٹے کی سماعت کے دوران 16 گواہوں کے بیانات قلمبند کئے گئے ہیں اور شہادتوں کا مرحلہ مکمل ہونے کے بعد ملزم عمران کا بیان قلمبند کیا جائے گا۔ عدالت میں اب تک 36 گواہوں کے بیانات قلمبند کئے جا چکے ہیں جبکہ محلے دار، تفتیشی ،ڈاکٹرز اور نمونوں کے پارصل لے جانے والے پولیس اہلکاروں کے بھی بیانات قلمبند ہوگئے ،بیانات قلمبند کرانے والوں میں زینب کے چچا اور 5 سال کا بھائی بھی شامل ہیں،انسداد دہشت گردی کی عدالت میں کیس آخری مراحل میں داخل ہوچکا ہے تاہم آئندہ 72گھنٹوں میں زینب قتل کیس کا فیصلہ سنائے جانے کا امکان ہے۔

وکیل دستبردار

مزید :

صفحہ اول -